گزشتہ رات سے یاسین ملک سے متعلق کچھ پتہ نہیں، مشعال ملک

0
32

حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک نے کہا ہے کہ عزاداروں پرتشدد،مودی انسانیت کے نام پردھبہ ہے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مشعال ملک کا کہنا تھا کہ جابراورفسطائی قوتوں کو للکارنا ہی حسینیت ہے،مودی کو عزاداروں کے خون کے ایک ایک قطرے کا حساب دینا ہو گا، مودی کےنشان عبرت بننے کا وقت دورنہیں،

مشعال ملک کا مزید کہنا تھا کہ گزشتہ رات سے یاسین ملک سے متعلق کچھ پتہ نہیں،یاسین ملک کی زندگی کولاحق خطرات سے پریشان ہوں.

یاد رہے کہ یاسین ملک کو 22 فروری کو گرفتار کر کے پولیس تھانہ کوٹھی باغ میں بند کردیا گیاتھا۔ بعد ازاں 7 مارچ کو انہیں کوٹ بلوال جیل جموں اور 9 اپریل کو تہاڑ جیل دلی منتقل کیا گیا۔ بھارتی حکومت نے ان کی جماعت جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ پر پابندی عائد کی ہے۔

کشمیر میں لاشیں گر رہی ہیں،نہیں جانتی سسرال والے کس حال میں ہیں، مشعال ملک

یاسین ملک کی طبیعت کی ناسازی کے حوالہ سے یاسین ملک کی ہمشیرہ اور والدہ نے سرینگر میں پریس کانفرنس کی تھی اس کے بعد یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ یاسین ملک کی حالت انتہائی تشویشناک ہے. بھارت سرکار نہ تو یاسین ملک سے ان کی اہلیہ کو ملنے دیتی ہے اور نہ ہی یاسن ملک کا علاج کرواتی ہے. یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک کا کہنا ہے کہ پاکستان انسانی حقوق کونسل کارکن ہے یاسین ملک کا کیس یو این میں لے کرجائے .

نہتی کشمیری قوم کے ساتھ آج سارا پاکستان کھڑا ہے، مشعال ملک

واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں تمام تعلیمی ادارے بند ہیں، کاروباری مراکز کو تالے لگے ہوئے ہیں، انٹرنیٹ و موبائل سروس بھی بند ہے،کشمیریوں کو گھروں سے باہر نکلنے کی اجازت نہیں. کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد مودی سرکار نے حریت رہنماؤں سمیت کشمیر کے سیاسی لیڈروں کو بھی گرفتار و نظر بند کر رکھا ہے. اس کے باوجود کشمیری بھارت سرکار کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں، بارہمولا میں بھارتی فوج نے دو کشمیری شہید کئے، درجنوں‌ کشمیری نوجوانوں کو پیلٹ گنوں سے زخمی کیا گیا، ہزاروں کشمیریوں کو گرفتار کیا گیا، گھروں میں چھاپوں کے دوران کشمیری خواتین کے ساتھ بھی دست درازی کی گئی.

 

یٰسین ملک کو آگرہ کے مینٹل ہسپتال میں‌ کس حالت میں رکھا گیا ہے؟ مشعال ملک نے بھارتی درندگی کا پول کھول دیا

یاسین ملک کی صحت پر مشعال ملک کا ایک بار پھر تشویش کا اظہار

Leave a reply