حفیظ سینٹر میں ‌لگی آگ خطرناک حد تک بڑھ چکی

حفیظ سینٹر میں ‌لگی آگ خطرناک حد تک بڑھ چکی
باغی ٹی وی رپورٹ کے مطابق، حفیظ سینٹر لاہور میں لگی آگ نے رفتہ رفتہ تمام پلازے کو اپنی لیٹ میں‌ لے لیا ہے اور اس میں موجود دکانیں اور ان دکانوں میں قیمتی سامان جن میں‌ کمپپیوٹر لیپ ٹاپ شامل تھے جل چکے ہیں اس طرح کروڑوں روپے کا نقصان ہو چکا ہے.
آگ بجھا نے میں اس وقت چار سے پانچ فائر بریگیڈ‌ کی گاڑیاں مصروف ہیں. لیکن آگ پر قابو نہیں پایا جا سکا ہے .
اسی طرح باغی ٹی وی کے نمائندے فائز چغتائی نے موقع پر رپورٹنگ کرتے ہوئے بتایا کہ آگ کی شدت اتنی زیادہ ہے کہ جب ہم راوی پل پر تھے اس آگ کے دھویں کو دیکھا جاسکتا تھا.


آگ پر قابو پانے کے لیے قریبی اضلاع ، قصور شیخوپورہ اور دیگر شہروں سے گاڑیاں بلائی جار رہی ہیں. پلازے میں واقع دکانوں میں موبائل فون، کمپیوٹر سمیت الیکٹرانکس سامان موجود ہے جو آگ کی شدت بڑھانے کا سبب بن رہا ہے جبکہ پلازے کی چھت پر پڑے ڈیزل کے ڈرم جو جنریٹرز کیلئے استعمال کئے جاتے ہیں، نے بھی آگ پکڑ لی۔ ریسکیو کی 12 گاڑیاں اور دو اسنارکل آگ بجھانے کے عمل میں مصروف ہیں تاہم گھنٹوں گزر جانے کے باوجود آگ کی شدت پر قابو نہیں پایا جا سکا، حکام نے فائر بریگیڈ کی مزید گاڑیاں طلب کر لیں۔

حفیظ سنٹر میں لگنے والی آگ پر قابو پانے کیلئے لاہور پولیس بھی کوشاں


سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے کہا ہے کہ حفیظ سنٹر سے 25 افراد کو ریسکیو کر لیا گیا ہے، شہریوں کو آتشزدگی سے دور رکھا جا رہا ہے، شاپنگ سنٹر کو 2 حصوں میں تقسیم کر کے پچھلے حصے کو آگ سے بچا لیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جس پورشن میں آگ لگی ہوئی ہے وہاں ریسکیو عملہ آگ بجھانے کی بھرپور کوشش کر رہا ہے۔ عمر شیخ نے کہا کہ دستیاب وسائل کو موثر طریقے سے استعمال کر رہے ہیں۔ دوسری جانب شاپنگ پلازے کے تاجر شکوہ کناں نظر آئے، سامان جلتا دیکھ کر جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور ان کی آنکھیں نم ہوتی رہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.