حکومت کا نصاب تعلیم کا منصوبہ مشرف دور 2006 تعلیمی پالیسی کا چربہ ہے،کاشف مرزا

حکومت کا نصاب تعلیم کا منصوبہ مشرف دور 2006 تعلیمی پالیسی کا چربہ ہے،کاشف مرزا

کاشف مرزا صدر آل پاکستان پرائیویٹ سکولزفیڈریشن نے کہا ہے کہ سنگل ایجوکیشن سسٹم کی بجائے سنگل نیشنل کریکلم کا کھوکھلا نعرہ ناقابل عمل ہے۔

کاشف مرزا کا کہنا تھا کہ نعرہ تعلیمی امتیازکا خاتمہ قابل تعریف ہے،لیکن جو منظور ہواوہ یکساں قومی نصاب بھی نہ ہے،اورنہ یکساں نظام تعلیم ،مارکیٹ میں سنگل نیشنل کریکم SNC کی نئی کتب عدم دستیاب ہیں۔ملک بھر نفاذ کاپہلا مرحلہ کتب کی عدم دستیابی کی وجہ سے ناقابل عمل ہے وفاقی وصوبائی محکمہ تعلیم کی نااھلیت کہ یکساں قومی نصاب ادھورا ہے۔پری نرسری،نرسری اور پریپ پر کا نصاب تیار ہی نہیں کیا گیا۔

کاشف مرزا کا کہنا تھا کہ ایلیٹ سکولز کو استثنی دے کر طبقاتی نظام کی آبیاری کی گئی ہے!یکساں قومی نصاب کا حقیقی مطلب ایلیٹ، پرائیویٹ،سرکاری یا مدرسے میں زیر تعلیم بچوں کو ایک معیار کی تعلیم حاصل ہو۔حکومت نےسٹیک ہولڈرز کی بجائےمن پسند لوگوں سےمن پسندفیصلے کرائے،مسترد کرتے ہیں۔ 18ترمیم کے بعد تعلیم دینے کا حق صوبوں کو حاصل ہے۔امتحانات میں صرف رٹا صلاحیت جانچی جاتی ہے۔ نمبرز گیم نظام کو یکسر تبدیل کیے بغیر نظام تعلیم کا معیار بہتر نہیں ہوسکتا۔

کرونا پھیلاؤ روکنے کے لئے این سی او سی کا عوام سے مدد لینے کا فیصلہ

کرونا وائرس ، معاون خصوصی برائے صحت نے ہسپتال سربراہان کو دیں اہم ہدایات

کرونا وائرس لاہور میں پھیلنے کا خدشہ، انتظامیہ نے بڑا قدم اٹھا لیا

تعلیمی ادارے بند، امتحانات کب ہوں گے؟ وفاقی وزیر تعلیم نے بتا دیا

تعلیمی ادارے کب سے کھلیں گے؟ وفاقی وزیر تعلیم کا بڑا اعلان سامنے آ گیا

کاشف مرزا کا کہنا تھا کہ قوم کو بتایا جائے اُردو کی بجائے میڈیم انگریزی رکھنے کی کیا مجبوری ہے۔حکومت کا تیار کردہ نصاب تعلیم کا منصوبہ مشرف دور 2006 تعلیمی پالیسی کا چربہ ہے۔نظام تعلیم یکساں کیا جائے، وگرنہ ون نیشن ون کریکلم محض اک کھوکھلے نعرے کے سوا کچھ نہیں!

مراد راس ڈنگر ڈاکٹر، ڈگری جعلی ہو سکتی ہے،اساتذہ کے معاشی قتل عام کا ذمہ دارمراد راس، کاشف مرزا کے سنگین الزامات

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.