حکومت کے لوگ شاید ہمیں جانتے نہیں‌ ہیں، مولانا فضل الرحمن نے ایسا کیوں کہا؟ اہم خبر

جمعیت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ناجائز جعلی اور کٹھ پتلی حکومت کےساتھ عوامی احتجاج ہے، پوری اپوزیشن ایک پیج پر ہے، ہمارے ساتھ سب کی تائید شامل ہے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عرفان صدیقی کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ہمارے ساتھ تمام مکاتب فکر کے لوگوں کی آواز شامل ہے، آئین سےوابستہ کوئی بھی بات اٹھائی جاتی ہےوہ سب کاآئینی حق ہے، پاکستان میں اقدارکی سیاست ختم ،گالم گلوچ کی سیاست شروع ہو چکی ہے،

مولانا فضل الرحمن نے کہاکہ پاکستان میں کسی پارٹی یا نظریے کی حمایت کرنا جرم بن چکا ، عرفان صدیقی کو گرفتار کرنے کا منصوبہ تشکیل دینے والوں تک رسائی چاہیے، کسی کےاوپر چرس ڈال کرمقدمے بنائے جا رہے ہیں ، ایسالگ رہا ہے ملک میں آمریت ہےاخلاقی اقدارکا جنازہ نکل گیا ، عرفان صدیقی کیساتھ واقعہ کیوں پیش آیا، کونسا منصوبہ تھا ،کس نےترتیب دیا، ایک شریف شہری کےساتھ یہ رویہ اپنایا گیا، چندروز قبل عرفان صدیقی کیساتھ افسوسناک واقعہ رونماہوا ،

انہوں‌ نے کہاکہ حکومت کے لوگ شایدہمیں جانتے نہیں ہیں، ہم عرفان صدیقی کیساتھ پیش آئے واقعے پراحتجاج کریں گے، ناجائز جعلی اور کٹھ پتلی حکومت کےساتھ عوامی احتجاج ہے، ہم ریاست سے بغاوت نہیں کر رہے، متاثرہ لوگ ہیں ، سیاسی اورفکری وابستگی کیاپاکستان میں جرم ہے؟.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.