fbpx

حلیم عادل شیخ اور وزیر اعلی ٰمراد علی شاہ کے اختلافات سیاسی معاملہ قرار

حلیم عادل شیخ اور وزیر اعلی ٰمراد علی شاہ کے اختلافات سیاسی معاملہ قرار

سندھ ہائی کورٹ،دہری شہریت اور جھوٹا حلف نامہ جمع کرانے سے متعلق کیس وزیر اعلی ٰمراد علی شاہ کے خلاف حلیم عادل شیخ کی درخواست پر فیصلہ جاری کر دیا گیا

حلیم عادل شیخ اور وزیر اعلی ٰمراد علی شاہ کے اختلافات سیاسی معاملہ قراردے دیا گیا ،عدالت نے فیصلے میں کہا کہ مراد علی شاہ پر آرٹیکل 62 ون ایف کا اطلاق نہیں ہوتا ،رٹ پٹشن میں یہ جائزہ لینا بھی ضروری ہے پٹشنرکے کیا مقاصد ہیں ؟حلیم عادل شیخ مراد علی شاہ کے سیاسی مخالف ہیں پس منظر سے بھی اندازہ ہوتا ہے یہ درخواست ذاتی سیاسی مخاصمت پر دائر کی گئی، پٹشن کا مفاد عامہ سے کوئی تعلق نہیں، بارہا پوچھنے پر بھی نہیں بتایا گیا مراد علی شاہ کے کاغذات نامزدگی کو چیلنج کیوں کیا ؟ ایک بار جھوٹا حلف نامہ یا غلط معلومات جمع کرانے سے ہمیشہ کیلئے نااہل قرار نہیں دیا جاسکتا اس حوالے سے سپریم کورٹ فیصلے دے چکی ہے

واضح رہے کہ حلیم عادل شیخ کی وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی نااہلی کی درخواست مسترد کر چکی ہے وکیل نے عدالت میں کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ صادق اور امین نہیں رہے،مراد علی شاہ نے الیکشن میں دہری شہریت چھپائی تھی،درخواست میں مراد علی شاہ پر الیکشن میں دہری شہریت چھپانے کاالزام ہے

سندھ میں اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ مراد علی شاہ پی ایس 73 سے منتخب ہوئے،جھوٹے حلف نامے جمع کروائے گئے، مراد علی شاہ صادق اور امین نہیں ،دہری شہریت کے باوجود 2007 میں الیکشن لڑا،مراد علی شاہ کو 2013 میں سپریم کورٹ نے نااہل قرار دیا تھا،ہم نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ مراد علی شاہ کو نااہل قرار دیا جائے،سندھ اسمبلی سے نا امید ہوچکے ہیں وہاں صرف اپنے قوانین بنائے جاتے ہیں کرپٹ وزیر اعلیٰ کے خلاف پٹیشن فائل کی ہے،سندھ میں زرعی پانی کی چوری کے خلاف درخواست دینے جارہے ہیں،کتوں کے کاٹے جانے اور گندے پانی کی فراہمی پرعدالت سے رجوع کریں گے، سندھ میں 43 لاکھ ایکڑ اراضی کی جعلی الاٹمنٹ کی جوڈیشل انکوائری ہونی چاہیے ،پولیس کے سپاہیوں کو قتل کرنے والے ڈاکو صوبائی وزیر کے محافظ ہیں،کچے کے ڈاکووَ ں کے سرپرست پکے کے ڈاکو ہیں

دوسری جانب حلیم عادل شیخ کی جانب سے وزیر اعلی سندھ کے خلاف ریٹرنگ آفیسر سینیٹ الیکشن کو تحریری درخواست بھی ارسال کی گئی ہے، حلیم عادل شیخ کی جانب سے دی گئی درخواست کے متن میں کہا گیا ہے کہ 14 فروری کو وزیر اعلی نے نیشنل میڈیا کے سامنے سینیٹ انتخابات میں سندھ سے ووٹوں سے زیادہ دس سیٹیں حاصل کرنے کا بیان دیا۔ وزیر اعلی سندھ الیکشن رولز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سینیٹ انتخابات میں ملوث ہوئے ہیں۔ ووٹوں سے زیادہ سیٹیں حاصل کرنے کا بیان دیکر وزیر اعلی کرپٹ پریکٹس میں ملوث ثابت ہوئے ہیں۔

عمران خان مایوس کریں گے یا نہیں؟ زرتاج گل نے کیا حیرت انگیز دعویٰ

نہر کنارے درخت کاٹ کر ان کے ساتھ دہشت گردی کی گئی، چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

ملزم نے دو شادیاں کر رکھی ہیں،وکیل کے بیان پر چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ نے کیا ریمارکس دیئے؟

سرکلرریلوے کی بحالی ،چیف جسٹس نے کی سماعت،سندھ حکومت نے دیا جواب

اتنے بے بس ہیں تو میئر بننے کی کیا ضرورت تھی، جائیں اور یہ کام کریں، عدالت کا میئر کراچی کو بڑا حکم

اربوں کی ریلوے کی زمین کروڑوں میں دینے پر چیف جسٹس نے کیا جواب طلب

عمارت میں ہسپتال کیسے بند ہو گیا؟ کیسے معاملات ہمارے سامنے آ رہے ہیں؟ چیف جسٹس کے ریمارکس

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!