fbpx

ہمارے ہاں فنکاروں‌کی حوصلہ افزائی میں کنجوسی سے کام لیا جاتا ہے جاوید شیخ

سینئر اداکار جاوید شیخ نے اپنے حالیہ انٹرویو میں کہا ہے کہ ہمارے ہاں فنکاروں کی حوصلہ افزائی اس طرح سے نہیں‌ کی جا تی جس طرح سے کی جانی چاہیے ہمیشہ ہی اس معاملے میں‌کنجوسی سے کام لیا جاتا ہے ایسا نہیں ہونا چاہیے.جاوید شیخ نے مزید کہا کہ میں‌ نے اپنے کیرئیر میں‌معیاری کام ہی کرنے کی کوشش کی اور کام کے معاملے میں سمجھوتہ نہیں‌کیا.نئے فنکاروں کو چاہیے کہ وہ معیار پر سمجھوتہ نہ کریں اور مختلف کردار کرنے کی کوشش کریں تاکہ ان کے کام میں نکھار آئے .مختلف کام ہمیشہ کام میں‌نکھار کا باعث بنتا ہے اور بہت کچھ سیکھنے کا موقع بھی میسر آتا ہے.جاوید شیخ نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ایک وقت تھا جب شوبز میں اتنا پیسہ نہیں تھا، ہم نے بہت سارے فنکاروں‌کو کمسپرسی کی حالت میں اس دنیا سے جاتے ہوئے دیکھا لیکن خوشی کی بات یہ ہے کہ آج شوبز میں پیسہ بہت زیادہ ہے فنکار معاشی طور پر بہتر ہیں. ایک فنکار جس نے ساری زندگی اپنے فن کو دی ہو اس کی عزت کی جانی چاہیے لیکن ہمارے ہاں تو دنیا سے جانے کے بعد ہی ایسا ہوتا ہے فنکار کو اسکی زندگی میں سراہیں اسکی حوصلہ افزائی کریں.
یاد رہے کہ جاوید شیخ نے پاکستانی فلموں کے ساتھ ساتھ بھارتی فلموں میں بھی اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے ہیںان کا شمار منجھے ہوئے اداکاروں میں ہوتا ہے.آج کل جاوید شیخ ڈراموں میں بھی نظر آرہے ہیں.