fbpx

ہر ایک سے سیکھیے تحریر: حُسنِ قدرت

میری عادت ہے کہ میں ہر شخص میں کوئی مثبت عادت ڈھونڈتی رہتی ہوں اسکی مثبت بات نوٹ کر لیتی ہوں اور اگر وہ مجھ میں موجود نہ ہو تو اسے اپنا لیتی ہوں کیونکہ اگر ایک انسان میں بہت ساری خوبیاں ہوتی ہیں تو وہیں اس میں چند خامیاں بھی ہوتی ہیں اور جس میں بہت ساری خامیاں ہوتی ہیں اس میں کوئی تو خوبی ہوتی ہی ہے اسلیے میں کوشش کرتی ہوں ہر انسان کی خوبی ڈھونڈوں "دنیا میں کوئی بھی فرد ایسا نہیں جسے کچھ معلوم نہ ہو اور دنیا میں کوئی ایک فرد ایسا بھی نہیں جسے سب کچھ معلوم ہو” ہمیں یہ بات سمجھ لینی چاہیے کہ ہم ہر انسان سے کچھ نہ کچھ سیکھ سکتے ہیں کیونکہ سیکھنے سکھانے کا عمل ساتھ ساتھ چلتا ہے اسلیے آپ چاہیں تو دوسروں کو سکھا بھی سکتے ہیں
اپنے قلب کو وسیع اور ذہن کو کشادہ رکھ کر ہی ہم دوسروں سے کچھ سیکھ سکتے ہیں اور یہ بھی ضروری ہے کہ ہمارے دل میں کسی کے لیے بغض اور عناد نہ رکھیں ہمیں چاہیے کہ ہم ہر انسان کو عزت کی نظر سے دیکھیں
کیونکہ جب ہم کسی کے لیے تحقیر کا جذبہ رکھتے ہیں تو ہم اس سے کچھ نہیں سیکھ سکتے کیونکہ جس نے کچھ سیکھنا ہوتا ہے تو وہ چیونٹی سے بھی سبق سیکھ لیتا ہے اور ہاری ہوئی جنگ جیت لیتا ہے
زندگی میں مشکلات اور آسانیاں کبھی یہ فیصلہ نہیں کرتیں کہ ہم کتنے ناکام ہوں گے یا کامیاب ،ہماری کامیابی یا ناکامی کا فیصلہ ہمارا ردعمل کرتا ہے اسلیے کسی مشکل یا آسانی کو ہم کبھی بھی کامیابی کی علامت نہیں کہہ سکتے نپولین کا ردعمل ہی تھا جسکی وجہ سے وہ چیونٹی سے سیکھ کر ہاری ہوئی جنگ جیت گیا۔ یہ بات بچوں کی تربیت میں شامل کریں کہ نشیب و فراز زندگی کا حصہ ہیں ہم جسطرح کے حالات سے گزرے ہیں انہیں مسائل یا وسائل کے روپ میں دیکھنا ہماری زندگی کا حصہ ہے یعنی برے حالات میں ان سے سیکھنا کہ ہم کیسے آگے بڑھ سکتے ہیں اتنی ساری حالات کی زنجیروں کے باوجود اور اچھے حالات میں آگے بڑھنا یہ بھی امتحان ہوتا ہے کہ ہم اپنی زندگی کو خود کو میسر آسودگیوں کی نظر کرنے کے بجائے ان سے بھی سیکھتے رہتے ہیں۔ اگر کوئی انسان چاہتا ہے کہ وہ مشکل حالات سے سیکھے تو اسے چاہیے کہ ان مشکل حالات کو مسئلے کی شکل نہ دے ،پریشان نہ ہو بلکہ وہ یہ سمجھے کہ یہ ایک امتحان کا مرحلہ ہے جو بہت جلد گزر جائے گا اور سب کچھ پہلے سے بھی بہتر ہو جائے گا لیکن مجھے موقع مل رہا میں ان سے کچھ سیکھوں میں آپ کو مثال دیکر سمجھاتی ہوں جو انسان حالات کی وجہ سے پیسے کی تنگی دیکھ رہا ہے اور اسکا کاروبار تباہ ہو چکا ہے تو اب وہ سیکھے گا ریسرچ کرے گا ،کتابیں پڑھے گا ،اپنا محاسبہ کرے گا اور ایک لائحہ عمل تیار کرے گا کہ اس کے پیچھے کونسی وجوہات تھیں اور دوبارہ سے وہ اپنا بزنس کیسے کھڑا کر سکتا ہے تو اس سب پہ عمل کرے گا اور جلد ہی دربارہ سے اپنے پیروں پہ کھڑا ہو جائے گا جبکہ جو انسان ہار تسلیم کرلے نہیں سیکھے گا وہ ان حالات میں جی بھی مشکل پائے گا اب کوئی انسان اس کی قدر نہیں کرتا کہ اسکا کاروبار تباہ ہو گیا ہے اور دوسری کوشش کر رہا پتہ نہیں کیا بنتا ہے اسکا اسکی کیا ویلیو ہے عین ممکن ہے کہ اسکا کاروبار بہت جلد پہلے سے بھی زیادہ ترقی کرے اور آپ اسکی ناقدری کرکے اس کے ملے تجربے سے بھی محروم ہو جائے گا
اگر آپ کو کوئی انسان اس وجہ سے ناگوار گزرے کہ اس میں کوئی خامی ہے تو اس خامی یا بری عادت کو دور کرنے کا طریقہ یہ نہیں ہے کہ آپ اسکی برائی کےبہت جگہ گُن گاتے پھریں اسکا طریقہ یہ ہے کہ آپ اسے الگ بلائیں اور انتہائی موزوں الفاظ کے ساتھ نرم لہجے میں اسے سمجھائیں کہ آپ ویسے تو اچھے ہیں لیکن تھوڑا سا یہ مسئلہ ہے اسے آپ ٹھیک کر لیں
اس طرح وہ انسان بھی آپ کے اچھے رویے سے بہت کچھ سیکھے گا اور آپ بھی انسانوں کی قدر کرکے ان سے بہت کچھ سیکھ سکیں گے
حُسنِ قدرت
Twitter: @HusnHere