fbpx

ہیلتھ کارڈ جاری رہے گا،مفت ادویات کی فراہمی بحال کریں گے،مسلم لیگ ن

مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سلمان رفیق اور خواجہ عمران نذیر نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ حمزہ شہباز نے محکہ صحت کی بہتری کے لیے اہم اجلاس ہوا، ہم نے ڈینگی کے مسئلہ پر بات کی، شہباز شریف نے رول ماڈل بنایا تھا جس کی دیگر ممالک نے بھی تعریف کی تاہم پچھلے دور میں حکمرانوں کی نااہلی کی وجہ سے لوگ جاں بحق ہوئے ہیں، آج ہم نے اہم فیصلے کئیے ہیں ڈینگی کے حوالے سے کام شروع کردیں گے ہم پوائنٹ سکورنگ نہیں کریں گےجو عمران خان کی حکومت کرتی رہی ہے ،وزیر اعلیٰ کے ساتھ کابینہ کا ہونا ضروری ہے جس کے آئینی اور قانونی تقاضے ہیں

خواجہ سلمان رفیق نے عمران نزیز کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وفاق میں عدم اعتماد کے بعد تحریک انصاف نے جو کیا اس میں سپریم کورٹ کو عمل دخل دینا پڑا جس کے بعد صورتحال بہتر ہوئی،یہی صورت حال پنجاب میں بھی پیدا کی گئی.سلمان رفیق نے کہا کہ کینسر ایک موذی مرض ہے اس کی ادویات کے حوالے سے آپ سب نے بات کی ،2018 تک ہمارا پروگرام بہتر انداز میں چلتا رہا ایک دن بھی ناغہ نہیں ہوا،بد قسمتی سے پچھلے دور میں اس پروگرام میں تعطل کیا گیا،جیسے ہی حمزہ شہباز نے ذمہ داری سنبھالی ہم نے فوری طور پر اس حوالے سے کام شروع کر دیا گیا،انہوں نے کہا کہہ صدر مملکت عارف علوی اور سابق گورنر عمر سرفراز چیمہ قانون سے کھلواڑ کر رہے ہیں.

،حمزہ شہباز نے ہدایت کی ہے کہ کوئی راستہ نکالا جائے جس سے ادویات کی فراہمی بحال ہو.بجٹ کی تکمیل کا عمل تحریک انصاف اور ق لیگ کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے مکمل نہیں ہو رہا.تمام مشکلات کے باوجود ہم محنت کریں گے اور آگے بڑھیں گے.خواجہ عمران نذیر نے کہا کہ عمران خان کی انا اور سابق گورنر عمر سرفراز کی خوشنودی اگرغریب عوام سے زیادہ اہم ہے تو قائم رہنی چاہیے ،لوگ آئیں گے اور چلیں جائیں گےکوئی شخص پاکستان سے زیادہ اہم نہیں ہے ،ان کو جولائی میں علم ہو گیا تھا کہ عدم اعتماد آ رہی ہے تو مارچ میں کاغذ لہرا کر سازش کا نعرہ لگایا.نواز شریف نے عالمی رہنماؤں کے دباؤ کو مسترد کر کے ایٹمی دھماکے کئیے .ان کے پاس اپنی کارکردگی دیکھانے کو کچھ نہیں ہے ان کے لنگر خانے بھی سیلانی والوں کے نکلے،آپ کا کام صرف مانگنا ہی ہے، چوہدری پرویز الٰہی کی سیاست وضع داری کو بھی آپ نے ختم کر دیا ہے.محمد خان بھٹی کو ہدایت کی گئی کہ جو بھی نتیجہ ہو بتانا وہی ہے جو پرویز الٰہی کہیں گے .پنجاب اسمبلی میں جو کچھ ہوا اس پر افسوس ہے ایسا نہیں ہونا چاہیے .ہم لوگوں کو سہولیات فراہم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، آپ نے پٹرول کی قیمت کا علان کر دیا لیکن ایک پیسہ نہیں رکھا اس کے لیے ،آپ کو بزدار کے استعفیٰ پر بعد میں یاد آیا کہ وہ غیر آئینی تھا، چوہدری سرور نے بزدار کو بلا کر استعفیٰ کی تصدیق کی.آپ منحرف اراکین کے حوالے سے بڑا شور مچا رہے ہیں لیکن جب ہمارے لوگ آپ کے ساتھ ملے تھے تب تو بڑے خوش ہوتے تھے ،آپ کے لوگ اقتدار کے لیے نہیں عوام کو جواب دینے کے لیے الگ ہوئے ہیں،شہباز گل جس کو کوئی نہیں جانتا تھا اس کو آپ نے تحریک انصاف کا ماما بنایا ہوا ہے ،مسجد نبوی میں جو کچھ ہوا شیخ رشید اور عمران خان کو اور کہیں نہیں تو اللہ کے سامنے جوابدہ ہونا پڑے گا.کینسر کی ادویات روکنے پر آپ کو جواب دینا ہو گا ،آپ خزانہ خالی چھوڑ کر گئے ہیں آئی ایم ایف کے ساتھ ایسا معاہدہ کر گئے ہیں جو کسی صورت قابل قبول نہیں.چوہدری پرویز الٰہی کے ذہن میں جو سازش تھی وہ اس پر عمل کر رہے ہیں ،آئین شکنوں کو قانون کے مطابق سزا دی جائے گی .کابینہ کی تشکیل کا راستہ بہت جلد نکلے گا اور آئین شکنوں کو سزا ملے گی ،جو ادویات ہم خرید کر گئے تھے تحریک انصاف حکومت نے انہیں سے گزارا کیا نئی نہیں خریدی،ہم کم وقت میں وہ تمام اقدامات کریں گے جس سے عوام کو سہولیات ملیں گی ،ہم سیاسی لوگ ہیں ہم چاہتے ہیں بات چیت سے راستے نکلیں،لیکن جب بات پنجاب کی عوام کی ہو گی ہمیں اپنی ذات سے بلند ہونا پڑے گا ،سلمان رفیق کا کہنا تھا کہ ہیلتھ کارڈ میاں نواز شریف نے شروع کیا تھا لیگل فریم ورک ہمارے دور میں ہوا تھا،بیس لاکھ کارڈ جنوبی پنجاب کے شہروں میں بانٹ دئیے تھے.ہم ہیلتھ کارڈ جاری رکھیں گے اور اس میں بہتری لائیں گے،منحرف اراکین پر تحریک انصاف کو سیخ پا ہونے کی ضرورت نہیں ہے،پرویز الٰہی تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی سے تعلق نہیں رکھتے نہ ان کی تقرری کا نوٹیفکیشن جاری ہوا،جن مریضوں کا کانٹریٹ ہے ان کو ادویات مل رہی ہیں،جن کو نہیں مل رہی ان کے لیے بھی کوئی راستہ نکالیں گے