fbpx

دل کا دورہ پڑنے کےبعدماڈل ایان علی نے ذہنی تناؤ کا علاج اور وزن کم کیسے کیا؟خود ہی سب کچھ بتادیا

کراچی :ماڈل ایان علی جو کہ پاکستان میں جہاں ماڈلنگ کے حوالے سے بڑی شہرت رکھتی ہیں وہاں وہ بڑے تعلقات کی وجہ سے بھی مشہور ہیں ، ماڈل ایان علی کے حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ وہ بہت زیادہ پریشان بھی رہیں، پاکستانی شوبز انڈسٹری کی معروف ماڈل ایان علی نے اپنے بڑھے ہوئے وزن اور دل کے عارضے میں مبتلا ہونے کی کہانی سنائی ہے۔

ایان علی نے ٹوئٹر پر اپنی ایک ویڈیو شیئر کرتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے کس طرح اپنا وزن کم کیا ہے ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ وہ سخت ورزشیں کررہی ہیں۔

ایان علی نے بتایا تھا کہ وہ پی ٹی ایس ڈی (پوسٹ ٹرامیٹک اسٹریس ڈس آرڈر) کا شکار تھیں جس کے بعد ان کا وزن 60 کلو سے 100 کلو تک چلا گیا تھا لیکن اب وہ اپنی سخت ورزش کے معمول کے بعد 58 کلوگرام ہو چکی ہیں۔

ایان نے کہا کہ 2015 میں عدالتی کیس کے بعد ان کی دماغی صحت گرنے لگی تھی اور اگلے دو سالوں تک ہر گزرتے دن کے ساتھ ڈپریشن، ذہنی تناؤ اور اضطراب بڑھتا گیا۔

 

 

یاد رہے کہ 2015 میں منی لانڈرنگ کیس کے بعد ایان علی کو بے پناہ شہرت ملی، انہیں اسلام آباد کے بے نظیر بھٹو انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر کسٹم حکام نے 50 لاکھ ڈالر سے زائد کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا۔

 

 

ماڈل نے اپنی ٹوئٹ میں بتایا کہ منی لانڈرنگ، قتل، دہشت گردی ہر ہفتے مجھے ایک نئے جعلی کیس سے نمٹنا پڑتا تھا جیل کے دنوں کے جسمانی و ذہنی تشدد کی باقیات بھی ساتھ رہتیں اور نیشنل ٹی وی پر غلیظ ترین کردار کشی مسلسل تنہا رہنے پر مجبور کرتی تھیں۔

ماڈل نے کہا کہ اسے گھبراہٹ کے دورے پڑنے لگے جس کی وجہ سے کھانے کا تناؤ مزید بڑھ گیا لہذا ہر بیماری کا علاج خوش خوراکی میں تلاش کیا اور اس کا انجام یہ ہوا کہ وزن بڑھتے بڑھتے 90 کلو تک جا پہنچا تاہم ای سی ایل سے نکلنے اور دبئی پہنچنے کے کچھ ہی ماہ بعد پہلا دل کے دورے کا سامنا کیا۔

واضح رہے کہ ایان علی نے اپنے ماڈلنگ کیرئیر کا آغاز 2010 میں کیا تھا اور بہترین فیمیل ایمرجنگ ماڈل کا ٹائٹل اپنے نام کیا تھا لیکن مبینہ طور پر منی لانڈرنگ کیس نے ان کا کیریئر ختم کر دیا۔

صحافیوں کے خلاف مقدمات، شیریں مزاری میدان میں آ گئیں، بڑا اعلان کر دیا

سرکاری زمین پر ذاتی سڑکیں، کلب اور سوئمنگ پول بن رہا ہے،ملک کو امراء لوٹ کر کھا گئے،عدالت برہم

جتنی ناانصافی اسلام آباد میں ہے اتنی شاید ہی کسی اور جگہ ہو،عدالت

اسلام آباد میں ریاست کا کہیں وجود ہی نہیں،ایلیٹ پر قانون نافذ نہیں ہوتا ،عدالت کے ریمارکس