حکومت سے مایوس، مسائل سے دوچار بیرون ملک پاکستانیوں نے وزیر اعظم کو دل کی بات کہہ دی

حکومت سے مایوس ، مسائل سے دوچار بیرون ملک پاکستانیوں نے وزیر اعظم کو دل کی بات کہہ دی

باغی ٹی وی رپورٹ کے مطابق بیرون ملک پاکستان کن مسائل سے دو چار ہیں اور حکومت ان کا تدارک کرنے میں‌ ناکام رہی ہے ، ان مسائل پر سمندر پار پاکستانیوں نے اپنے دل کی آواز وزیر اعظم پاکستان کو سنا دی،

پاکستان کے معزز وزیر اعظم محترم جناب عمراں خان صاحب! بیرون ملک مقیم پاکستانی ہونے کے ناطے سے میں اس بات کو آپ کو باورکرانا چاہتا ہوں کہ جب بھی غیر ملکی خیراتی ، مالی اور اخلاقی مدد وغیرہ کے ضمن میں ضرورت ہوتی ہے ہم نے ہمیشہ پاکستان کی مدد اور حمایت کی ہے

لیکن ہمیں آپ کی حکومت کی طرف سے اور نہ ہی آپ کے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی ہیلپ ڈیسک کی طرف سے کوئی تعاون حاصل ہوا ہے۔

موبائل فون کے اضافی ٹیکس ادا کرتے کرتے ہماری زندگی متاثر اور قابل رحم ہو کر رہ گئی ہے جو ایک تکلیف دہ اور غیرضروری قانون ہے اور یہ صرف پوری دنیا میں صرف پاکستان پر لاگو ہوتا ہے ، جب بھی آپ کو ملک سے باہر ہوائی سفر کرنا پڑتا ہے . ہوائی اڈے ایک افراتفری کی حیثیت رکھتے ہیں۔ دوسری طرف کی دنیا نے اپنے لوگوں کے لئے ہوائی اڈوں پر سفر کو آسان بنانے کے لئے ڈیجیٹلائزیشن کو ترقی یافتہ بنا لیا ہے۔

بیرون ملک مقیم غیر منقولہ جائداد دوسرے ملکوں میں سرمایہ کاری کے لیے کوئی سہولت نہیں دی گئی، پاکستان نے ریل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری کے لیے ایک بھی رہن کی سہولت متعارف نہیں کروائی. حقیقت میں تمام مالیاتی ادارے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ملک میں رہن لے جانے کی حوصلہ شکنی کر رہے ہیں جبکہ ایسا کر لینے سے ملک میں بہت ساری زرمبادلہ لانے کا سبب بنے گا۔

بینکاری کا شعبہ ایک تباہی کی حیثیت رکھتا ہے اس سلسلے میں ہمیں زیادہ پریشانی لاحق ہے ہمارے لیے پیسہ واپس وطن بھیجنا زیادہ مشکل ہو گیا ہے۔اگر اس میں‌آسانی ہوتی ہے تو ملکی زرمبادلہ کا ہی فائدہ ہوگا

اب بیرون ملک مقیم پاکستانی جب یہ واپس آتے ہیں تو انھیں خود سے الگ ہونے کے لئے کسی ہوٹل میں رکنا پڑتا ہے جو کہ بہت ہی احمقانہ اور مناسب اقدام ہے تاہم ہمیں ہوائی اڈے پر ڈیجیٹل تھرمامیٹر رکھنا چاہئے جس سے لوگوں کے جسمانی درجہ حرارت کی جانچ پڑتال کی جاسکتی ہے۔ کوئی بیمار ہے تو مناسب اقدام اٹھانا چاہئے۔

مجھے افسوس ہے کہ جناب عمران خان کا ذکر کرتے ہوئے ہم بیرون ملک مقیم پاکستانی آپ کے ساتھ اور آپ کی نااہل ٹیم کے ساتھ کر رہے ہیں اور ہم اس اقدام کا آغاز کر رہے ہیں کہ جب تک ہم آپ کی طرف سے کچھ ترقی نہیں دیکھ پائیں گے تب تک آپ اور آپ کی بیوقوف حکومت کی حمایت کے لئے کچھ نہیں کیا جائے گا۔حل نہ ہونے والے سیکڑوں مسائل میں سے کچھ اوپر نمایاں کے ہیں۔
اب ایسا وقت آگیا ہے ہمیں لگتا ہے کہ پاکستان اب ہمارا گھر نہیں رہا اور ہمیں اس کے بارے میں سوچنا چھوڑدینا چاہئے جب تک کہ ہمارے ملک میں آپ جیسے قائدین موجود نہ ہوں جو ہمارے لئے آسان بنیادی مسائل حل نہیں کرسکتے ہیں۔خاں‌ صاحب آپ کے اور آپ کی حکومت کے لے مزید کوئی اقدام ہمارے ذریعہ شروع نہیں ہوا ہے اور یہ پوری دنیا میں چلے گا کیوں کہ آپ اور آپ کی ٹیم ہمارے لئے بیکار ثابت ہوئی ہے۔

نیک تمناؤں کے ساتھ بیرون ملک دل شکستہ پاکستانی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.