fbpx

72 لاکھ روپے مالیت کی غیر قانونی یوریا کھاد ضبط

تمام برآمدی سامان پر نگرانی بڑھانے کے نتیجے میں انسداد سمگلنگ آپریشن کی تکمیل کرتے ہوئے، کلکٹریٹ آف کسٹمز اپریزمنٹ کوئٹہ نے 72 لاکھ روپے مالیت کی غیر قانونی یوریا کھاد ضبط کر لی جو افغانستان سمگل کی جا رہی تھی ۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے کارروائی کی تفصیلات کے مطابق ، کسٹم سٹیشن چمن سے تازہ سبزیوں کی آڑ میں بھاری مقدار میں یوریا کھاد افغانستان سمگل ہونے کی مصدقہ اطلاعات موصول ہونے ملنے پر اسسٹنٹ کلکٹر کسٹم ہاؤس چمن نےمؤثر کارروائی کرنے کیلئے ایک ٹیم تشکیل دی ۔ ایک 10 ویلر ہینو ٹرک کو روک کر اس کی مکمل تلاشی کرنے پر تازہ سبزیوں (آلو) کے نیچے چھپائے گئے یوریا کھاد کے تھیلوں کو برآمدکرلیا گیا۔50 کلو یوریا کھاد کے کل 480 تھیلے آلو کی 80 بوریوں کے نیچے چھپائے گئے تھے ۔ ضبط شدہ سامان کی کل مالیت 72 لاکھ روپے تھی ۔

برآمد کنندگان اور کلیئرنگ ایجنٹ کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی اور ایک شخص کو گرفتار کرلیا گیا ۔ معاملے میں ملوث تمام افراد کو بے نقاب کرنے کے لیے مزید تفتیش کا عمل جاری ہے۔ تمام برآمدی سامان کی کڑی نگرانی کی جا رہی ہے۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو اسمگلنگ کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر عمل پیرا ہے ، لہٰذا بارڈر پر کارگو کی نقل و حرکت پر نگرانی بڑھا دی گئی ہے۔

وزیر خزانہ شوکت ترین نے ایف بی آر کی پاکستان بھر میں جاری کامیاب انسداد سمگلنگ مہم کو سراہا ہے ۔ چیئرمین ایف بی آر/سیکریٹری ریونیو ڈویژن، ڈاکٹر محمد اشفاق احمد نے ممبر کسٹمز (آپریشنز ) ایف بی آر سید محمد طارق ہداکی تمام طرح کی سمگلنگ کے خلاف عدم برداشت کی پالیسی اپنانے پر تعریف کی ہے ۔ انہوں نے ٹیکس کمپلائنس کو زیادہ سے زیادہ کرنے کے لیے ملک بھر میں اسمگلنگ کے ناسور کےخاتمے کے اپنے پختہ عزم کا اعادہ کیاہے۔