fbpx

امریکہ اورچینی دفاعی حکام کے درمیان سنگاپورمیں اہم ملاقات جاری

لاہور:امریکہ اورچینی دفاعی حکام کے درمیان سنگاپورمیں اہم ملاقات جاری ،اطلاعات کے مطابق امریکہ اور چین کے درمیان عالمی معاملات پرمشاورت اور بات چین کا ایک دور شروع ہوچکا ہے، اس سلسلے میں مصدقہ اطلاعات ہیں کہ آج چینی اور امریکی دفاعی سربراہان سنگاپور میں اپنی پہلی آمنے سامنے ملاقات کے لیے ملاقات کر رہے ہیں۔آخری اطلاعات کے آنے تک ملاقات جاری تھی

چین امریکہ ٹیکنالوجی کی جنگ میں شدت،ٹرمپ نے حکمنامے پر دستخط کر دیئے

اس سلسلے مین معروف چینی روزنامہ گلوبل ٹائمز نے پہلے ہی انکشاف کردیا تھا کہ "چینی وزیر دفاع وی فینگے جمعے کی سہ پہرشنگری لا ڈائیلاگ میں امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن سے ملاقات کریں گے۔”

شنگری-لا ڈائیلاگ سیکورٹی سمٹ کا 19 واں ایڈیشن دو سال کے وبائی امراض سے متاثرہ وقفے کے بعد آج دوبارہ شروع ہو رہا ہے۔ اتوار تک جاری رہنے والے اس ایونٹ کے لیے 42 ممالک کے اعلیٰ دفاعی اور سکیورٹی حکام اکٹھے ہو رہے ہیں۔

چین امریکہ تجارتی جنگ، ختم ہو گی یا نہیں؟

جاپان کے وزیر اعظم فومیوکشیدا اہم خطاب کریں گے۔ آسٹن ہفتے کے روز تقریب میں تقریر کرنے والے ہیں، جبکہ وی اتوار کو مقررین میں شامل ہیں۔

یہ بھی کہا جارہا ہے کہ جنوری 2021 میں بائیڈن انتظامیہ کے اقتدار میں آنے کے بعد سے، آسٹن اور وی نے صرف ایک بار بات کی ہے — اس اپریل میں 45 منٹ کی ایک فون کال جسے پینٹاگون نے محض "اچھا” قرار دیا۔

سنگاپور میں ان کی متوقع ملاقات ایک ایسے وقت میں ہو رہی ہے جب واشنگٹن ایشیا پیسیفک کے خطے پر زیادہ توجہ دے رہا ہے، دو طرفہ اور کثیر جہتی تعاون کو فروغ دے رہا ہے کیونکہ وہ بیجنگ کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کو روکنے کی کوشش کر رہا ہے۔

چین امریکہ پر برس پڑا،تائیوان کو ہتھیاروں کی فروخت بند کرنے کا مطالبہ

آسٹن نے سنگاپور میں پہنچتے ہی ٹویٹ کیا، "کہ میں ہند-بحرالکاہل میں اپنے اتحاد اور شراکت داری کو مزید مضبوط کرنے کا منتظر ہوں، اور امن اور سلامتی کے لیے خطے کے مشترکہ وژن کو آگے بڑھاتا ہوں۔”