fbpx

عمران بتائے کہ انہیں مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کیخلاف رپورٹ کس نے دی؟ مریم اورنگزیب

وفاقی وزیر اطلاعات اور نشریات مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ عمران خان بتائیں ن ليگ، پيپلز پارٹی کے بارے میں کن ایجنسیوں نے رپورٹ دی تھی؟۔ تماشے،الزامات چھوڑیں، نام بتائیں۔

مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران خان بتائیں مسلم لیگ (ن)اور پی پی پی کے بارے میں کن ایجنسیوں نے رپورٹ دی تھی؟رپورٹ دینے والے لوگوں کے نام بتائیں؟۔


سابق وزیراعظم سے سوال کرتے ہوئے انہوں نے یہ بھی کہا کہ عمران خان بتائیں کہ چیف الیکشن کمیشنر کے بارے میں گارنٹی کس نے دی تھی؟، تماشے، الزامات چھوڑیں اور نام بتائیں۔ کس کے کہنے پر جھوٹے الزام لگاتے رہے اور جیلوں میں ڈالتے رہے، نام بتائیں؟۔

اورنگزيب کا یہ بھی لکھنا تھا کہ ریلی نہیں بتائیں آپ نے شہباز گل سے اداروں کے اندر بغاوت کا بیان کیوں جاری کروایا؟، کیوں لسبیلہ کے شہدا کے خلاف اپنے سوشل میڈیا ٹرولز سے مہم چلائی؟۔

وفاقی وزیر احسن اقبال نے کہا ہےکہ ملک کو جتنا نقصان عمران خان نے پہنچایا کوئی دشمن بھی نہیں پہنچا سکتا۔

لاہور چیمبر آف کامرس میں خطاب کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ آنے والے وقت میں حکومت نام کی چیز غیر مؤثر ہو جائے گی، اب پرائیویٹ سیکٹر ملک کو آگے لے کر جائے گا، ہمیں آگے بڑھنا ہے تو ہمیں سرمایہ کاری درکار ہے جس کے لیے پرائیویٹ سیکٹر سے مدد لینا ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ جب ہم گئے تھے تب ترقیاتی بجٹ ایک ہزار ارب تھا، ملک کو جتنا نقصان عمران خان نے پہنچایا کوئی دشمن بھی نہیں پہنچا سکتا، گزشتہ چار سال میں سی پیک پر مجرمانہ غفلت ہوئی ہے،چار سال میں ایک ڈالر بیرون ملک سے سی پیک پر پاکستان نہیں آیا۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ دنیا میں جس ملک نے ترقی کی وہاں برآمدات بڑھیں، ہمیں ٹیکس کلیکشن کو بھی دُگنا کرنے کی ضرورت ہے، ہمارا 1500 ارب روپے کا دفاعی بجٹ اور 530 ارب روپے پینشن کا بجٹ ہے ، ٹیکس ریونیو کو 15 بیس ارب روپے تک لیجانا ہوگا۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ جب پاکستان امریکا کی ضرورت تھا تب ہم نے کوئی فائدہ نہیں لیا، ہمارا اقتدار میں دورانیہ 9 سال ہے، ہماری حکومت ہمیشہ سے بحران کی کیفیت میں رہی، اگرپاکستان میں جمہوریت کو تسلسل سے چلنے دیا ہوتا تو حالات بہتر ہوتے کیونکہ سیاسی استحکام اور اقتصادی پالیسیوں کا تسلسل ملکی ترقی کا راز ہے۔

علاوہ ازیں وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل کا کہنا ہے کہ عمران خان کی مرضی ہے کہ شہباز گل سے تفتیش بھی نہ ہو، سارا تماشہ شہباز گل کو تفتیش سے بچانے کیلئے کیا جارہا ہے۔ وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ عمران خان اقتدار میں فرعون اپوزیشن میں مظلوم بننے کی کوشش کر رہے ہیں۔

قادر پٹیل کا کہنا تھا کہ عمران خان سارا تماشا شہباز گل کو تفتیش سے بچانے کیلئے کر رہے ہیں، ان کی مرضی ہے کہ شہباز گل سے تفتیش بھی نہ ہو۔
وفاقی وزیر نے کہا کہ اب یہ راز باقی نہیں رہا کہ شہباز گل کا بیانیہ عمران خان کا ہی تھا، ساری خرابی کی جڑ ممنوعہ فارن فنڈنگ ہے۔

قادر پٹیل نے مزید کہا کہ عمران خان کی فنڈنگ کا بنیادی مقصد پاکستان کو کمزور کرنا تھا، وہ آئین اور قانون کو تماشا بنانا چاہتے ہیں انہیں روکنا ہوگا۔

ادھر آج پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے یوٹیوبرز سے ملاقات میں کہا ہے کہ میں جو کام کرتا ہوں کشتیاں جلا کر کرتا ہوں۔ چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے یوٹیوبر سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف کے ساتھ عوامی سپورٹ ہے اور میں جو بھی کام کرتا ہوں کشتیاں جلا کر کرتا ہوں۔ میں نے سب کچھ بیچ کر پاکستان میں انویسٹ کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم آرام سے اسلام آباد کو بند کر سکتے ہیں اور میں فائنل قدم اس لیے لوں گا کہ اپنے مقصد تک پہنچ جاؤں۔ ہم نے 4 دن کے نوٹس پر ہاکی کا میدان بھرا یہ کوئی نہیں کرسکتا اور انہوں نے مل کر مینار پاکستان پر جلسی کی۔