ورلڈ ہیڈر ایڈ

عمران خان کی زیر صدارت اجلاس، 30 جون کے بعد ٹیکس چوروں‌ کے خلاف کریک ڈاؤن کا عندیہ

وزیراعظم پاکستان عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں‌ 30 جون کے بعد ٹیکس چوروں کے خلاف کریک ڈاؤن کا عندیہ دیا گیا ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اجلاس بنی گالہ میں‌ ہوا جس میں‌ حکومتی اقتصادی ٹیم کے اراکین حفیظ شیخ، حماد اظہر، شبر زیدی اور وزارت خزانہ کے دیگر اعلیٰ حکام شریک ہوئے. اجلاس میں 11 جون کو پیش کیے جانے والے بجٹ کے خدوخال پر مشاورت کی گئی اور چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے ایمنسٹی اسکیم پر اب تک ہونے والی پیش رفت پر وزیراعظم کو بریفنگ دی۔ اجلاس میں موجودہ ملکی معیشیت، درآمدات و برآمدات کے خسارے، آئی ایم ایف معاہدے کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور 11 جون کو پیش کئے جانے والے مالی بجٹ 2019-20 کے خدوحال کے حوالے سے تفصیلی مشاورت بھی کی گئی۔ اس دوران وزیراعظم کو بتایا گیا کہ 30 جون کے بعد ٹیکس چوروں کے خلاف کریک ڈاون کیا جائے گا۔

وزیراعظم عمران خان نے اجلاس میں کہا کہ ٹیکس چوروں کو پکڑنے میں تمام ادارے حکومت کے ساتھ ہیں، ایمنسٹی سکیم سے جو فائدہ نہ اٹھاے اسے کوئی رعایت نہیں دیں گے۔ بتایا گیا ہے کہ اجلاس میں وزیراعظم نے اقتصادی ٹیم سے سوال کیا کہ بڑے مگرمچھوں کو ٹیکس نیٹ میں کیسے لایا جائے، صرف تنخواہ دار طبقہ کیوں ٹیکس دے جس پر وزیراعظم عمران خان نے 30 جون کے بعد ٹیکس چوروں کے خلاف کریک ڈاؤن کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ ایمنسٹی اسکیم اور ٹیکس ریٹرنز کی تاریخ میں توسیع سے بھی جو فائدہ نہ اٹھائے اسے کوئی رعایت نہیں دیں گے جب کہ ٹیکس چوروں کو پکڑنے کیلئے تمام ادارے حکومت کے ساتھ ہیں۔

یاد رہے کہ تحریک انصاف حکومت اپنا پہلا بجٹ پیش کرنے جا رہی ہے جس میں آئی ایم ایف معاہدے کے باعث خدشہ ہے کہ عوام پر بھاری ٹیکس لگائے جائیں گے. اگر حکومت کی طرف سے دوبارہ یہ ٹیکس لگائے جاتے ہیں‌ تو عوام اور زیادہ مہنگائی کی چکی میں‌ پس کر رہ جائیں گے. حکومت کی طرف سے باربار بجلی، پٹرول اور گیس کی قمیتیں‌بڑھائے جانے سے پاکستان کے عوام پہلے ہی بہت زیادہ پریشان ہیں اور آنے والے دنوں‌ میں ان کی پریشانی میں‌ مزید اضافہ ہوتا نظر آرہا ہے.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.