عمران خان کی ٹرمپ سے تاریخی ملاقات، مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کا خیر مقدم

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کے مابین آج تاریخی ملاقات ہوئی ہے، اس موقع پر امریکی صدر نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کی ہے، دونوں‌ ملکوں‌ کے سربراہان کے مابین پہلے ون آن ون ملاقات ہوئی جبکہ بعد ازاں وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے جس میں دو طرفہ تعلقات مزید بہتر بنانے اور تجارتی روابط کے فروغ سمیت اہم معاملات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا،

عمران خان پاکستان کے مقبول ترین وزیر اعظم، دورہ کی دعوت ملی تو پاکستان جاؤں گا، ٹرمپ

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستان کو مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں رہنما اس کیلئے اہم کردار ادا کر سکتے ہیں، امریکی صدر ٹرمپ نے کہاکہ پاکستان میں اب ایک عظیم لیڈر ہے، افغانستان کے معاملے پر پاکستان کے پاس وہ پاور ہے جو دیگر ممالک کے پاس نہیں، افغان مسئلے کا حل مذاکرات سے ہی ممکن ہے ، میں‌ عمران خان کی بات سے اتفاق کرتا ہوں، ان کا کہنا تھا کہ پاکستان، افغانستان میں اب ہماری بہت مدد کر رہا ہے، دہشتگردی کیخلاف دونوں ملکوں نے مل کر جنگ لڑی، امید ہے کہ دونوں ممالک کے تعلقات میں مزید بہتری آئے گی، پاکستان کیساتھ افغانستان سے امریکی فوج کے انخلا پر بات جاری ہے،

امریکی صدر نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کر دی

وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ملاقات جاری، گارڈ آف آنر پیش

پاکستان کیلیے امریکا انتہائی اہمیت کا حامل ملک ہے، عمران خان

امریکی صدر ٹرمپ نے پاکستانی قوم اور وزیراعظم عمران خان کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ایک عظیم ملک ہے، انھیں دورہ پاکستان کی دعوت دی گئی تو وہ اسے ضرور قبول کریں گے، پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کا اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ماضی کےمقابلے میں افغان مسئلےکےحل کیلیےامن معاہدےکےزیادہ قریب ہیں، امیدہےآنیوالے دنوں میں طالبان پرمذاکرات جاری رکھنے پرزوردینے کےقابل ہوں گے، ہم بھارت کے ساتھ بات چیت کیلیے تیار ہیں، افغان تنازع کا حل صرف طالبان سےامن معاہدہ ہے، امریکی صدر ٹرمپ کا یہ بھی کہنا تھاکہ وہ افغانستان میں اپنی فوج کی تعداد کم کر رہے ہیں، انہوں نے کہاکہ میری اور عمران خان کی نئی قیادت آئی ہے، پاکستان ماضی میں امریکہ کا احترام نہیں کرتا تھا لیکن اب ہماری کافی مدد کررہا ہے، بھارتی وزیر اعظم نےبھی مقبوضہ کشمیر کےتنازع کےحل کیلیے مجھ سے کہا ہے، امریکامسئلہ کشمیرپر پاک بھارت تعلقات بہترکرنے میں مدد کر سکتا ہے،

عمران خان سے ملاقات کوانتہائی خوشگواردیکھ رہا ہوں، ڈونلڈ ٹرمپ

پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ افغان مسئلے کے حل کیلیے امریکا پاکستان کے ساتھ مل کر کام کررہا ہے، پاکستان نےدہشتگردی کیخلاف جنگ میں 70ہزار جانوں کی قربانی دی، دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستانی معیشت کو150 ارب ڈالرکانقصان ہوا، صدر ٹرمپ کی قیادت میں امریکا ،پاکستان اوربھارت کو قریب لاسکتا ہے،

انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کاعہدہ سنبھالنے کےبعد مجھے شدید مشکلات کا سامنا کرناپڑا، پاکستان نے نائن الیون کے بعد دہشتگردی کے خلاف جنگ میں امریکا کا ساتھ دیا، پاکستان نے نائن الیون کے بعد دہشتگردی کیخلاف امریکا کا ساتھ دیا، ہمیں سخت رویہ ختم کرکےجنوبی ایشیا میں امن و استحکام لانا چاہیے، مسئلہ کشمیر کے حل کیلیے امریکی صدرکی ثالثی کی پیشکش کاخیرمقدم کرتےہیں، انہوں نے کہاکہ دہشتگردی کے خلاف ہم نے مشترکہ جنگ لڑی،پاکستان کےلیے امریکا انتہائی اہمیت کاحامل ملک ہے، برصغیرمیں امن کے لیے امریکی صدرسے کردارادا کرنے کی درخواست کریں گے، افغان تنازع میں پاکستان نے فرنٹ لائن کا کردار ادا کیا، وزیراعظم عمران خان نے مزید کہا کہ پاکستان نے نائن الیون کے بعد دہشتگردی کے خلاف جنگ میں امریکا کا ساتھ دیا،

واضح رہے کہ وزیر اعظم عمران خان کے حالیہ دورہ امریکہ کو بہت زیادہ اہمیت دی جارہی ہے، وزیر اعظم کی آج کی ملاقاتوں کا باقاعدہ شیڈول جاری کر دیا گیا ہے، وزیر اعظم آج اہم کاروباری شخصیات سے بھی ملاقات کریں گے، وہ پاک امریکا بزنس کونسل کے ساتھ میٹنگ کریں گے اور غیر ملکی میڈیا کو انٹرویو بھی دیں گے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.