fbpx

پاکستان کی سالمیت پرکوئی کمپرومائز نہیں،دہشتگردی کو ختم کرکے رہیں گے،وزیر خارجہ

6 مہنیے گزرنے کے باوجود ابھی تک بنی گالہ سے چیخیں سنائی دے رہی ہیں, بلاول

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیر خارجہ بلاول زرداری نے کہا ہے کہ ہم نے اسی شہر میں جمع ہو کر لانگ مارچ کا اعلان کیا تھا،

کراچی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے چیئرمین، وزیر خارجہ بلاول زرداری کا کہنا تھا کہ کہا تھا سندھ کا سفر کرتے ہوئے پنجاب اور پھر اسلام آباد پہنچیں گے، ہم نے کہا تھا اسلام آبادپہنچ کر کٹھ پتلی کو جمہوری ہتھیار کے ذریعے گھر بھیجیں گے، ہم نے آئینی راستہ اختیار کرتے ہوئے عدم اعتماد کے ذریعے عمران خان کو گھر بھیجا، ہم نے اس کٹھ پتلی اور نالائق کا صحیح بندوبست کر دیا،ہم ان کی تقسیم کی سیاست کیخلاف نکلے عمران خان نے جو معاشی بحران پیدا کیا ہم اس کے خلاف نکلے، ہم نے ان کا مقابلہ کیا اور جیت کر واپس آئے، جب بھی مقابلہ ہو گا تو جیت سچ کی ہو گی اور جھوٹ کو شکست ہو گی،جب بھی مقابلہ ہو گا فتح جمہوریت کی ہو گی،

کراچی کو کوئی دہشتگرد اب بند نہیں کر سکتا،وزیراعلیٰ سندھ

وزیر خارجہ بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ میں وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ اور کراچی کی ٹیم دونوں کو ،انکی محنت ،پورے پاکستان کونظر آ رہی ہے، مجھے اکثر کہا جاتا ہےکہ مراد علی شاہ کراچی کا وزیراعلیٰ ہے، لیکن جتنا کام مراد علی شاہ نے کراچی کے لئے کیا، جتنا وسائل ، ٹائم کراچی کے لئے دیا اتنا کسی نے بھی نہیں کیا،یہ پاکستان کا تاریخ کا حصہ ہے، تاریخ گواہ ہے کہ ہمارا وزیراعلیٰ سندھ کا وزیراعلیٰ ہے تو کراچی کا وزیراعلیٰ بھی ہے، پیپلز پارٹی کے کارکنوں نے کراچی میں لانگ مارچ کا اعلان کیا تھا، جیالوں نے کٹھ پتلی سلیکٹدڈ کو اقتدار سے نکال کر ایسے گھر بھیجا کہ 6 مہنیے گزرنے کے باوجود ابھی تک بنی گالہ سے چیخیں سنائی دے رہی ہیں۔ پارٹی کارکنان کی جدوجہد کامیاب ہو گی، پہلے جو آپہ کے حق پر ڈاکہ مارا جاتا تھا اب ہم نہیں‌ ہونے دیں گے،2018 الیکشن نہیں سلیکشن ہوئی تھی، پیپلزپارٹی نے ماضی میں بھی مشکلات کا سامنا کرکے ملک کو بچایا مستقبل میں بھی پیپلزپارٹی ملک کو بچائے گی ،جیت ہمشیہ امید کی سیاست کی ہوگی نفرت کی سیاست کا کوئی مستقبل نہیں اور نفرت کی سیاست کرنے والوں کا شکست مقدر ہے۔ کراچی کی ہر گلی ، یونین کونسل میں لوگ نئے سال کا جشن منائیں گے ،

وزیر خارجہ بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ 2018 کے الیکشن میں لیاری میں بھی ڈاکہ مارا گیا، ضمنی الیکشن میں آپ نے مقابلہ کر کے اس ناانصافی کا بدلہ لیا،کہتے ہیں کہ ہم الیکشن سے بھاگ رہے ہیں ،اصل میں عمران خان خود بھاگ رہے ہیں ،آپ نے ثابت کر دیا کہ پیپلز پارٹی جو بات کرتی ہے وہ کر کے دکھاتی ہے، ہم نے کہا لانگ مارچ کر کے عمران کو گھر بھیجیں گے جو ہم نے کر کے دکھایا،ہم نے یکجہتی اور اتحاد کیساتھ ملک کو آگے لے کرجانا ہے،پہلے ہم شکایت کرتے تھے کہ ہم سے الیکشن کا موقع چھینا جا رہا ہے،15جنوری کو کراچی میں انتخابات ہوں گے، جہاں سیلاب نہیں وہاں بھی بہت سے مسائل ہیں، لوکل الیکشن میں جو بھی جیتیں گے ہم قبول کریں گے، جو کراچی کا اگلا میئر ہو گا وہ اسی میدان میں بیٹھا ہے، آنے والے الیکشن میں کراچی کا میئر پیپلز پارٹی کا ہوگا، عمران خان کی وجہ سے ملک میں مہنگائی ہے،ہمیں احساس ہے کہ ملک میں مہنگائی اور بیروزگاری ہے، عمران خان کے لائے گئے بحران کی وجہ سے ملک میں مہنگائی ہے،ہم نے کراچی سے کچرے کو صاف کیا ہے، چاہتے تھے کہ پبلک ٹرانسپورٹ کانظام سب کوملے،الیکشن جیتنے کے بعد کے ایم سی کے زیرانتظام اسپتالوں کامعیاربھی بہتر بنائیں گے،سندھ کے ہر ڈسٹرکٹ میں پیپلز بس سروس شروع کریں گے، پیپلزپارٹی نے ہر طرح کی دہشتگردی کا مقابلہ کیا ہے بینظیر بھٹو نے اپنی جان کی قربانی تو دی مگر اپنے موقف سے پیچھے نہیں ہٹیں ہماری افواج اور عام شہریوں نے دہشتگردی کیخلاف لڑائی میں شہادتیں دیں،عمران خان ملک کو دیوالیہ پن کی طرف لے کرگئے،عمران خان نے دہشتگردی کو ایک بار پھر ملک میں پھیلنے کاموقع دیا،پاکستانیوں کے قاتلوں کو عمران خان نے اپنا مہمان بنایا،بارڈر پار جیل میں قید دہشتگردوں کو رہا کر کے پاکستان کے قبائلی علاقوں میں لایا گیا،عمران خان نےجن کو واپس لایا وہ لوگ دہشتگردی اور جرائم میں ملوث ہیں ، ہمیں دہشتگردی کیخلاف پاکستان کے مفادات کو دیکھ کرپالیسی بنانا پڑے گی،پاکستان کی سالمیت پر کوئی کمپرومائز نہیں کریں گے،دہشتگردی کو ختم کرکے رہیں گے،ہمیں امپورٹڈ کہنے والے عمران خان نے ملک میں دہشتگردی کو واپس امپورٹ کیا،

بینظیر کے افتتاح کردہ سنٹر کو تبدیلی سرکار نے بیچنے کا اشتہار دے دیا

آصفہ زرداری کس صورت میں الیکشن لڑیں گی؟ بڑا اعلان ہو گئا

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے میڈیکل ٹراما سینٹر لاڑکانہ کا دورہ کیا