عمران خان نے ایسے ملک سے ہتھیاروں‌ کی خریداری کا اعلان کر دیا کہ بھارت، امریکہ دونوں‌ پریشان ہو گئے

وزیر اعظم پاکستان عمران خان جو اس وقت شنکھائی تعاون تنظیم اجلاس میں شرکت کیلئے کرغزستان میں‌ ہیں‌، نے روس سے ہتھیاروں کی خریداری میں دلچسپی ظاہر کی اور کہا ہے کہ پاکستان اور روس کی عسکری قیادت اس سلسلہ میں‌ پہلے سے باہم رابطے میں‌ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے یہ بات روس کے سرکاری ٹی وی کو دیے جانے والے ایک انٹرویو میں‌ کی ہے. ان کا کہنا تھاکہ روس کے صدر ولادی میر پیوٹن سے بشکیک میں ہونے والے شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس میں ملاقات ہوگی جس میں اہم امور زیر بحث آئیں‌ گے اور باہم دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا جائے گا. انٹرویو کے دوران وزیر اعظم عمران خان سے پاکستان اور روس کی فوجوں‌کے مابین مشترکہ جنگی مشقوں‌ سے متعلق بھی سوال کیا گیا تو اس کے جواب میں‌ ان کا کہنا تھا کہ پچھلے کچھ عرصہ میں‌ دونوں ممالک کے دفاعی تعلقات میں بہت بہتری آئی ہے اور میں‌ سمجھتا ہوں‌کہ ان میں مزید بہتری کی امید ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ 50، 60 اور 70 کی دہائی کا عرصہ سرد جنگ کی نذر ہوا، اس عرصہ میں انڈیا سوویت یونین کے قریب تھا اور پاکستان امریکی کیمپ میں تھا لیکن اب یہ صورتحال نہیں ہے. اس وقت پاکستان اور بھارت دونوں کے ہی امریکہ کے ساتھ دوستانہ تعلقات ہیں، اس وقت اس دور کی سرد جنگ جیسی صورتحال نہیں ہے، ہم نے اس عرصہ میں‌ روس کے ساتھ اپنے رابطوں میں بہتری پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔

واضح رہے کہ وزیر اعظم عمران خان شنگھائی تعاون تنظیم اجلاس میں شرکت کیلئے کرغزستان ہیں جہاں‌ ان کی روسی صدر سمیت دیگر ممالک کے سربراہان سے بھی ملاقاتیں‌ متوقع ہیں.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.