fbpx

عمران خان نے پاک امریکا تعلقات کو نقصان پہنچایا، بلاول

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وفاقی وزیر خارجہ بلاول زرداری نے کہا ہے کہ ملک کے بڑے حصے میں تاحال سیلابی پانی موجود ہے،

وزیرخارجہ بلاول بھٹو زرداری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان اورسندھ کے بیشترعلاقوں میں سمندر ہی سمندر ہے ،سیلاب دریاوں سے نہیں آسمان سے اس کا پانی آیا،3کروڑ لوگ قدرتی آفت سے متاثر ہوئے جون سے لیکرآج تک متاثرین سیلاب کی مدد کا سلسلہ جا ری ہے ،متاثرین کی تعداد امداد اور وسائل سے زیادہ ہے ایک تہائی پاکستان سیلابی پانی میں ڈوبا ہواہے ،متاثرین کے لیے ہمیں بیرون ممالک سے تعاون کی فراہمی کا عمل جاری ہے،سیلاب سے فصلیں تباہ ہوئیں جس کے باعث خوراک کا مسئلہ پیدا ہوا،سیلابی پانی کی وجہ سے متاثرین میں بیماریاں پھیل رہی ہیں،کھڑے پانی میں مچھروں کی بھرمار ہے ،ہمارے اسپتال ان اضافی مریضوں کا بوجھ نہیں اٹھاسکتی ،ایک چیلنج سے نکلتے ہیں تو دوسرا سامنے آتا ہے ،ہمیں مزید کام کرنے کی ضرورت ہے،نقصانات کا جائزہ لینے کے لیے سروے کا عمل جاری ہے ہمارا اندازہ ہے کہ 30ارب ڈالر کا نقصان ہوا ہوگا،

وزیر خارجہ بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ ہم مایو س نہیں، سیاست نہیں ملکی مفاد کودیکھنا ہوگا، ملک کو متحد کرکے عوام کی مدد کرنا ہوگی،ہمیں پہلی بار ایسا محسوس ہورہا ہے کہ وزیراعظم پورے ملک کو اون کررہے ہیں،کچھ لوگ اب بھی کچھ الگ سوچ رہےہیں،انہیں عوام کا سوچنا چاہیے جب پرویز مشرف کی حکومت تھی تو کیا ہم نے لانگ مارچ شروع کیا تھا،سیاست ہوتی رہے گی،الیکشن بھی ہوتے رہتے ہیں مگر یہ وقت ملک کو مشکل سے نکالنے کا ہے،میں نے محسوس کیا کہ ملک کو وحدت کی ضرورت ہے ،متاثرین کی مزید امدا د کےلیے کام کرنا ہوگا،کیا سیلاب متاثرینموجودہ صورتحال کے ذمہ دار ہیں؟یہ ترقی یافتہ ممالک کا نتیجہ بھگت رہے ہیں پاکستان کے لوگوں نے تاریخ میں ہر مشکل کو دیکھا اوراس کا سامنا کیا ہے،اقوام متحدہ سیکریٹری جنرل پاکستان آئے انہوں نے اپنی آنکھوں سے سب کچھ دیکھا، ہم نے موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے کوششوں پر زور دیا پورے یونائیٹڈ نیشن کا ایجنڈا موسمیاتی تبدیلی میں تبدیل کر دیا،انتونیو گوتریس اورامریکی صدر بائیڈن نے کہا کہ پوری دنیا کو پاکستان کی مدد کر نی ہے، جہاں جہاں انفراسٹرکچر کا نقصان ہوا ہے، اسے کھڑا کریں گے، نومبر کے اختتام تک نئی فصل اگانے کے قابل ہوں گے ہم چھوٹے کسانوں کو تعاون فراہم کریں گے، سیلاب سے معیشت تباہ ہوئی ،ہم دوبارہ ملک کو معاشی طور پر مضبوط بنائیں گے، سندھ حکومت کو کہا ہے کہ محنت سے اگلی فصل ہر حال میں اگائیں گے اس مشکل سے نکل کر پورے پاکستان کو ایک چھتری تلے لائیں گے، سیلاب سے معیشت تباہ ہوئی ،ہم دوبارہ ملک کو معاشی طور پر مضبوط بنائیں گے، اگر مستقبل میں ایسا سیلاب آیا تو اس سے نمٹنے کی بھی تیاری کرنی ہے معیشت کی بحالی کے لیے ضروری ہے کہ ہم فصل تیار کرنے کے لیے دن رات ایک کریں

شوکت ترین ، تیمور جھگڑا ،محسن لغاری کی پاکستان کے خلاف سازش بے نقاب،آڈیو سامنے آ گئی

فوج اور قوم کے درمیان خلیج پیدا کرنا ملک دشمن قوتوں کا ایجنڈا ہے،پرویز الہیٰ

سپریم کورٹ نے دیا پی ٹی آئی کو جھٹکا،فواد چودھری کو بولنے سے بھی روک دیا

وزیر خارجہ بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان ڈوبا ہواتھا ،لوگ شہباز گل کے ڈرامے کے پیچھے پڑے ہوئے تھے اس وقت ہمیں سیاست کا نہیں سوچنا،کچھ لوگ سازشیں کر رہے ہیں کہ سیلاب کے دوران ان کی حکومت کیسے آئے، ہمارے لوگ زندہ رہیں گے تو سیاست کرسکیں گے، کراچی نہیں پورے ملک کی تعمیر نو کی ضرورت ہے ،خود تعمیر نو کے لیے وسائل جمع کر رہا ہوں، میرے آنے سے پہلے جو ہوا سو ہوا ،اب خود کام کر رہا ہوں ،ماڈل یوسی نہیں پورے سندھ کو ماڈل صوبہ بنائیں گے، ہم نے ایک قوم بن کر سانحات کا مقابلہ کرنا ہے، بین الاقوامی برادری کے سامنے پاکستان میں ہونے والی تباہی کا مقدمہ پیش کیا،امیر ممالک نے امیر بننےکے لیے ہم پر بوجھ ڈالا اور موسمیاتی تبدیلیاں لے آئے، ہم عالمی برادری سے بھیک نہیں انصاف کا مطالبہ کر رہے ہیں پاکستان امریکہ تعلقات بہتری کی طرف جا رہے ہیں،ہمیں صرف پاک بھارت اور پاک افغانستان تعلقات کے حوالے سے دیکھا جاتا تھا میں سیلاب زدگان کو چھوڑ کر جلسے نہیں کر سکتا جہاں میں نہیں جا سکتا وہاں کارکنان جائیں اور بلاول بن کر کام کریں اپوزیشن اراکین قومی اسمبلی میں آتے ہیں نہ کسی دفتر میں جاتے ہیں،

وزیر خارجہ بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان نے ملک کو ہر طرح سے نقصان پہنچایا،عمران خان نے خارجہ پالیسی کو نقصان پہنچا یا ،فنانشل ٹائمز نے لکھا عمران خان نے چندہ چوری کیا پی ٹی آئی دور میں دوست ممالک کےساتھ تعلقات متاثر ہوئے ہیں عمران خان نے اپنی انا کے لیے ملک کو نقصان پہنچایا، عمران خان کا طریقہ کار ہے کہ اتنا جھوٹ بولوکہ لوگ سچ سمجھیں ،عمران خان نے اپنا گھر ریگولرائز کرایا اور دوسروں کے گھر گرائے ، فارن فنڈنگ لینے والا چندہ چور دوسروں پر الزام لگاتا ہے، عمران خان سازش کررہے ہیں کہ سیلاب کے دوران حکومت آئے،سندھ کا پیسہ سپریم کورٹ میں پھنسا ہوا ہے ،اس پیسے سے ہم ایک بی او ڈی کا مسئلہ حل کرتے، ڈھائی سو تربیلا ڈیم جتنا پانی کہاں لے کر جاتے، سو کلو میٹر کی جھیل سندھ کے درمیان بن چکی ہے ،دریائےسندھ کے اردگرد سمندر ہے،عمران خان کی عادت ہے وہ الزامات لگاتے ہیں ،ہم پر کبھی سیلاب متاثرین کی امداد میں کرپشن کا الزام نہیں لگا ،عمران خان پر توشہ خانے میں خیانت کا الزام لگا،عمران خان کے پروپیگنڈے سے کوئی فرق نہیں پڑتا،عمران خان کے ساتھ سندھ کے قوم پرست بھی سیلاب پر سیاست کر رہے ہیں ، یہ کہا جا رہا ہے کہ ہم ڈوبے نہیں ہمیں ڈبویا گیا ، غلط ہے ،