fbpx

مسئلہ کشمیرپروزیراعظم عمران خان کے جواب پرمودی کے پسینے چھوٹ گئے

اسلام آباد: مسئلہ کشمیرپروزیراعظم عمران خان کے جواب پرمودی کے پسینے چھوٹ گئے،اطلاعات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے مسئلہ کشمیر پر دو ٹوک موقف دیتے ہوئے کہا کہ یقین دلاتا ہوں جب تک بھارت پانچ اگست کا اقدام واپس نہیں لیتا حالات معمول پر نہیں آئیں گے۔

تفصیلات کے مطابق “آپ کا وزیراعظم آپ کے ساتھ” کے عنوان سے ٹیلی فون پر عوام سے براہ راست بات چیت کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ جس طرح ہم نے کشمیر کا مقدمہ لڑا، چیلنج کرتا ہوں پچھلے پچاس سال میں کبھی کسی حکومت نے نہیں لڑا۔

آزاد جموں و کشمیر سے ایک کالر کے سوال کے جواب میں وزیراعظم عمران خان نے واضح کیا کہ بھارت کے ساتھ تعلقات تب تک معمول پر نہیں آسکتے جب تک وہ پانچ اگست دوہزار انیس کو مقبوضہ جموں و کشمیر کے حوالے سے اٹھائے گئے اپنے غیر قانونی اقدامات کو واپس نہیں لیتا۔

وزیراعظم نے کہا کہ صرف ایمرجنسی کی وجہ سے چینی اور کاٹن کی تجویز آئی تھی لیکن کابینہ نے فیصلہ کیا کہ ایسا کوئی کام نہیں ہوگا جس سےکشمیری بھائیوں کو لگے کہ ہم بھارت سے تعلقات معمول پر لا رہے ہیں، مسئلہ کشمیر پر بھارت لچک نہیں دکھاتا تو ہم نارملائزیشن میں نہیں جاسکتے۔

دوسری طرف وزیراعظم کے اس موقف پربھارتی میڈیا بھی سیخ‌پاہوگیاہے ، ہندوستان ٹائمز، انڈین ایکسپریس،انڈیا ٹوڈے،دی ہندو، ٹائمزآف انڈیا سمیت کئی دیگرمیڈیا ٹائیکون نے ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی وزیراعظم کی نیت ٹھیک نہیں ہے وہ بھارت سے کشمیر لئے بغیرسکون نہیں کریں گے ،

ان کا کہنا تھا کہ چینی ہو یا چین کا معاملہ عمران خان صرف ایک ہی رٹ لگا رہا ہے کہ وہ کشمیروں‌کوآزادی دلوائے بغیرکسی بھی معاہدے کواہمیت نہیں دیتے ، اس سے صاف ظاہر ہے کہ عمران خان بھارت کے لیے خطرہ ہے اوریہ بھی ہوسکتا ہے کہ اگروہ بھارت کے ساتھ معاملات کوٹھیک کرتا ہے توپھربھی وہ اس آڑ میں کشمیر اورکشمیریوں کی مدد جاری رکھے گا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.