fbpx

زراعت کے شعبے میں عمران خان کا انقلاب پہلا حصہ تحریر: احمد خان

پاکستان زراعت کے اعتبار سے دنیا کا سب سے بہترین ملک ہے پاکستان کی تقریبا 60 فیصد آبادی زراعت سے وابستہ ہے جس ملک کا کسان خوشحال ہو سمجھو وہ ملک خوشحال ہے اس ملک کی معیشت اٹھ جاتی ہے وہ ملک بڑی تیزی سے ترقی کرنے لگتا ہے

کیا آپ نے کبھی غور کیا کہ بھارت کی معیشت ہم سے بہتر کیوں ہے؟؟ کیونکہ بھارت کی حکومت نے اپنے کسانوں کو ہر طرح کی سہولیات فراہم کر کے اپنی برآمدات کو بڑھایا ہے

اور کیا آپ نے کبھی غور کیا کہ ہم سب سے بہترین نہری نظام رکھنے کے باوجود بہترین زرخیز زرعی زمین رکھنے کے باوجود اپنی برآمدات کیوں نہ بڑھا سکے؟؟

کیونکہ ماضی کے تمام حکمرانوں نے جہاں ایک طرف ہمارے کسانوں کو سہولیات سے محروم رکھا تو وہاں دوسری طرف زرخیز زمینوں پر جان بوجھ کر وہ چیزیں کاشت کی گئی جس سے ان کے اپنے ذاتی کاروبار منافع بخش ہوتے گئے اور دیگر فصلوں کی پیداوار کم ہوتی چلی گئی اور یوں آہستہ آہستہ زراعت کا شعبہ تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا

مثال کے طور پر نواز شریف آصف علی زرداری اور جہانگیر ترین جیسے مافیا کی بہت سی شوگر ملز ہیں اس کے متعلق یہ خبر نکل کر سامنے آئی تھی کہ

 انہوں نے جان بوجھ کر پاکستان کی زرخیز زمینوں پر کماد کی کاشت کر کے پاکستانی زراعت کو تباہ کیا ہے جن زمینوں پر کپاس اور گندم کی زیادہ پیداوار ہونا تھی وہاں انہوں نے کماد کاشت کر کے اپنے ذاتی کاروبار کو فائدہ پہنچایا ہے

نمبر 2 زراعت

آپ یہ پڑھ کر حیران رہ جائیں گے کہ عمران خان کا یہ اقدام پاکستانی زراعت میں کتنا زبردست انقلاب لے کر آئے گا

عمران خان نے پاکستانی کسانوں کو جو سہولیات مہیا کی ہیں ان سہولیات کے بعد انشاءاللہ نہ صرف پاکستان کا کسان خوشحال ہو جائے گا بلکہ اس مرتبہ پاکستان میں ریکارڈ فصلوں کی پیداوار بھی ہوگی

کسان کے لیے دو سب سے بڑے مسئلے ہیں

1 کاشتکاری کے لیے کھاد بیج سپرے خریدنا 

عمران خان نے کسان کے اس مسئلہ کو حل کرتے ہوئے کھاد بیج اور سپرے خریدنے کے لئے ڈیڑھ لاکھ روپے کا بلا سود قرضہ فراہم کر دیا ہے یعنی مثال کے طور پر اگر میرے معاشی حالات اجازت نہیں دیتے کہ میں کوئی بھی فصل کاشت کروں یعنی گندم یا کپاس تو اب میں اس قابل ہو گیا ہوں کہ ڈیڑھ لاکھ روپے کا بلا سود قرضہ لے کر میں کوئی بھی فصل کاشت کر سکتا ہوں

2 کسان کا دوسرا بڑا مسئلہ زرعی آلات خریدنا 

 کسان کو زمینوں اور فصلوں کی کاشت کے لیے مختلف زرعی آلات کی ضرورت پیش آتی رہتی ہے لیکن آپ یہ جان کر بھی حیران رہ جائیں گے کہ عمران خان نے کسان کا یہ مسئلہ بھی حل کر دیا ہے اب کسان بڑی آسانی کے ساتھ دو لاکھ روپے تک کا بلا سود قرضہ لے کر اپنے زرعی آلات خرید سکتا ہے

اور صرف یہی نہیں اگر کسان کو اپنے لئے گھر بنانا ہو تو اسے 20 لاکھ روپے تک کا قرضہ بھی فراہم کیا جا رہا ہے بات صرف یہاں ختم نہیں ہوتی بلکہ اس کے گھر کے ایک فرد کو بالکل مفت میں حکومت کی جانب سے ہنر مندی بھی سکھائی جائے گی

اس کے علاوہ زراعت کے شعبے میں بے شمار ایسے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں جو لکھنے بیٹھ جاؤں تو کالم ختم ہونے کا نام نہیں لے گا بس اتنا لکھ دیتا ہوں کہ بلوچستان میں تقریبا ایک کروڑ یا اس سے زائد ایکڑ پر زیتون کے درختوں کی کاشت کی جا رہی ہے اور یاد رکھیئے کھانے میں سب سے بہترین تیل زیتون کا ہوتا ہے اور یہ کھانے پینے کے علاوہ بہت سے معاملات زندگی میں استعمال ہوتا ہے

لیکن شرم تم کو مگر آتی نہیں ایسی سہولیات ملنے کے باوجود بھی لوگ عمران خان کو برا بھلا کہتے ہیں اسے بددعائیں دیتے ہیں اسے حالات کی خرابی کا ذمہ دار قرار دیتے ہیں 

لیکن سچ تو یہ ہے جو خدا کا ناشکرا ہو وہ بھلا اپنے محسن کا کیسے شکر گزار ہو سکتا ہے

@iamAhmadokz