fbpx

وزیرآباد واقعے میں ایک نہیں3 شوٹر تھے،عمران خان، تیسری بار بدلا بیان

راولپنڈی:وزیرآباد واقعے میں ایک نہیں3 شوٹر تھے،عمران خان، تیسری بار بدلا بیان،اطلاعات کے مطابق سابق وزیراعظم چیئرمین پاکستان تحریک انصاف نے راولپنڈی میں ایک بارپھر وزیرآباد واقعہ کے حوالے سے اپنا بیان بدلہ ہے ، عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیرآباد واقعے میں ایک نہیں3 شوٹر تھے،

عمران خان کو یوٹرن ماسٹر کہا جاتا ہے وہ اپنے جھوٹوں کو یوٹرن کہتے ہیں، عمران خان نے وزیر آباد حملے کے بعد ایک بار نہیں بار بار بیان بدلے اور ایسے لگ رہا ہے کہ آنیوالے دنوں میں وہ مزید بیان بدلیں گے، راولپنڈی میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ کہ وزیرآباد میں میرے اوپرہونے والے حملے میں ایک نہیں بلکہ تین شوٹرتھے،عمران خان اپنی تقریر میں کہا کہ جب میرے اوپرحملہ ہوا تو اس وقت نیچے کھڑے ہوئے شوٹر پر فائرنگ کی گئی ،جس کے نتیجے میں فائروہاں شوٹرکے پیچھے جانے والے معظم کو لگا اور وہ جاںبحق ہوگیا،

عمران خان نے شوکت خانم میں حملے کے بعد پہلی پریس کانفرنس کی تھی تو اسوقت کہا تھا کہ دو شوٹر تھے، عمران خان پر حملے کے بعد عمران خان کا میڈیکل کسی سرکاری ہسپتال سے نہیں ہوا،عمران خان اپنی مرضی سے شوکت خانم گئے، میڈیکل سرکاری ہیسپتال سے نہ ہونے کی وجہ سے عمران خان کو کتنی گولیوں کے‌ذرات لگے،کیا ہوا، کچھ ؤاضح نہیں کیونکہ عمران خان خود تو ہر روز بیان بدل رہے ہین اور کبھی کہتے ہیں دو گولیاں لگیں، کبھی کہتے ہیں تین لگیں،کبھی کہتے ہین چار، اب شوٹر والے بیان پر بھی عمران خان قائم نہ رہ سکے،

عمران خان پر حملے کی تحقیقات کرنیوالی جے آئی ٹی بھی عمران خان کے دو شوٹر کے پہلے دعوے کو رد کر چکی ہے ،جے آئی ٹی کا کہنا ہے کہ حملہ آور ایک ہی تھا ، دوسری گولیاں عمران خان کے سیکورٹی گارڈ نے چلائیں، تاہم عمران خان اپنا دماغ لڑاتے ہوئے ہر روز نیا انکشاف کرتے ہیں اور پھر بھول جاتے ہیں کہ میں نے اس بارے پہلے کیا تھا،

الیکشن کی تاریخ چاہئے تو عمران خان پی ڈی ایم قیادت سے ملیں، وزیر داخلہ

 چارکار سوار لڑکیوں نے کارخانے میں کام کرنیوالے لڑکے کو اغوا کر کے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

خان صاحب کی نظریں کہہ رہی ہیں کہ محمود خان آ سکتا ہے تو وہ کیوں نہیں آیا؟

 عمران خان نے پنجاب اور خیبر پختونخواہ کی اسمبلیوں سے نکلنے کا اعلان کر دی