fbpx

بھارت لُٹ گیا،4 دنوں میں دس لاکھ کرونا کیسزہرطرف لاشیں ہی لاشیں:مودی جان بوجھ کرمروا رہا ہے:خفیہ ذرائع

نئی دہلی :بھارت لُٹ گیا،4 دنوں میں دس لاکھ کرونا کیسزہرطرف لاشیں ہی لاشیں:مودی جان بوجھ کرمروا رہا ہے:راہول گاندھی،اطلاعات کے مطابق بھارت اس وقت اپنی تاریخ کے مشکل دورسے گزررہا ہے جہاں کرونا وائرس کی تباہ کاریوں نے تمام کوششیں بے سود بنادی ہیں

 

ذرائع کے مطابق کرونا کیسز اس حد تک بڑھ چکے ہیں کہ پچھلے 4 دنوں میں دس لاکھ سے زائد افراد کرونا وائرس کے حملے کا شکارہوئے ہیں اوردوسری طرف حکومت بھی بے بس دکھائی دیتی ہے

 

اس کے ساتھ ساتھ اہم بھارتی شخصیات نے یہ انکشاف کیا ہے کہ جہاں ایک طرف کرونا سے تباہی پھیل رہی ہے وہاں مودی حکومت کی خواہش بھی ہے اورحکمت عملی بھی کہ کرونا کی آڑ میں بھارت کی آبادی جتنی کم ہوسکے ضرور ہونی چاہیے

 

اس حوالے سے بھارتی ماہرین کہتے ہیں اوریہ دعویٰ کررہے ہیں کہ بھارت دنیا کوکرونا ویکسین تو فراہم کررہا ہے لیکن اس کے اپنے لوگ بڑی تیزی سے مررہے ہیں بھارت ان کوکیوں کرونا ویکسین نہیں دے رہا

 

اطلاعات کے مطابق بھارت میں اب تک کے سب سے زیادہ کیس اور اموات رپورٹ ہوئی ہیں بھارت میں 24 گھنٹوں میں تقریباًٍٍ 3 لاکھ کیس،2 ہزارسے زائد اموات رپورٹ ہوئی ہیں دلی کے اسپتالوں میں آکسیجن کی قلت،حکومت کی مدد کیلئے سوشل میڈیا پراپیل کی گئی ہے دلی میں ہر تیسرے شخص کا کورونا ٹیسٹ مثبت آنے لگا،بھارت میں لاشوں کوسپرد خاک کرنے اورجلانے کیلئے جگہ کم پڑنے لگی

 

بھارت کی مرکزی وزارت صحت کے مطابق گزشتہ ایک دن میں بھارت میں کورونا وائرس کی وجہ سے 2023 اموات ہوئی ہیں جبکہ دو لاکھ پچانوے ہزار اکیالیس مریض سامنے آئے ہیں بھارت میں کورونا کیسز کی مجموعی تعداد 15616130 ہو گئی ہے مجموعی طور پر 182553 اموات ہو چکی ہیں ۔

 

بھارتی ریاست گجرات میں ہسپتالوں میں بیڈز نہ ملنے پر مسلمانوں نے مساجد کو کھول دیا ہے اور مساجد میں کرونا مریضوں کو رکھا جا رہا ہے،مسلمانوں کا ہے کہ انسانیت کو بچانے کے لئے سب کو ملکر کام کرنا ہو گا، رمضان کے مقدس مہینے میں ہم اس نیک کام کو مساجد مین سر انجام دین گے مسلمانوں نے اپنی مدد آپ کے تحت کئی مساجد میں 50 پچاس بیڈز لگا دیئے ہیں جہاں کرونا مریضوں کو رکھا جا رہا ہے

 

یہ بھی انکشافات سامنے آرہے ہیں کہ بھارت اب کرونا کیسزکے اعتبار سے امریکہ کے بعد دنیا کا دوسرا بڑا ملک ہے اوراگریہی رفتار رہی تو اگلے چند دنوں تک بھارت دنیا کا پہلا ملک بن جائے گا جہاں سب سے زیادہ کیسز پائے گئے ہیں

 

یہ بھی انکشاف سامنے آیا ہےکہ یہ ڈیٹا صرف 10 بھارتی ریاستوں سے حاصل کیا گیا ہے جہاں پچھلے 24 گھنٹوں میں کرونا کے 76 فیصد کیسزسامنے آئے

اس کے ساتھ ساتھ پچھلے 24 گھنٹوں میں اموات کی شرح میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے ، ان میں دہلی سب سے زیادہ متاثرہ شہر ہے ، ملک میں پچھلے24 گھنٹوں میں ہونے والی اموات 2000 ہزار سے تجاوز کرگئی ہیں

 

 

جہاں تک تعلق ہے کہ بھارتی ادارے مودی پرشک کرنے لگےہیں اوران کا کہنا ہےکہ جب کہ ان حالات میں بھارت ساری دنیا کوویکسین فروخت کررہا ہے پھراپنے لوگوں کوویکسین دینے میں کیوں سستی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے ،

 

بھارتی حکام اوردیگرعالمی ذرائع کے مطابق کرونا سے مرنے والوں کی تعداد میں اس قدراضافہ ہوا ہےکہ اب شمشان گھاٹ بھی بھرگئے ہیں اوروہاں اب جگہ نہیں رہی جس کے مناظرزیرنظرتصاویرسے نمایاں ہورہے ہیں 

ان شکوک وشبہات کا جائزہ لینے کے بعد تحقیقاتی ادارے اس نہج پرپہنچے ہیں کہ مودی ایک حکمت عملی کے ساتھ اپنے مخالفین کے ٰعلاقوں میں یہ ویکسین نہیں بھیج رہا

 

ان محققین کا کہنا ہےکہ اس کا مقصدبظاہربھارت کی آبادی کو کم کرنا ہے ، ان کا کہنا ہے کہ حکومت اورمودی اس بات کوتسلیم تو نہیں کریں گے لیکن خفیہ ذرائع نے اس بات کا خدشہ ظاہر کیا ہےکہ وسائل کے باوجود ویکسین کا نہ لگانا اس بات کی دلیل ہے کہ مودی جان بوجھ کربھارتی آبادی کوکم کرنا چاہتے ہیں

اس حوالے سے اپوزیشن لیڈراورکانگریسی رہنما راہول گاندھی بھی یہ خدشہ ظاہرکرچکے ہیں کہ مودی کہ یہ حکمت عملی ہے کہ وہ بھارت کی بڑھتی ہوئی آبادی کو کرونا کی آڑمیں کم کرلیں

 

یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ مودی کی اس پالیسی کا مسلمان بہت زیادہ شکارہیں اوریہ بھی شکایات آرہی ہیں کہ ان علاقوں کے مسلمان جوانتہائی پسماندہ ہیں اورجن کی مڈیاتک رسائی نہیں اوران کا کوئی پرسان حال نہیں ان کوکرونا ویکسین فراہم نہیں کی جارہی اوران علاقوں میں بہت زیادہ اموات دیکھنے میں آرہی ہیں‌

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.