fbpx

بھارتی فوج کے تیس افسران اور جوانوں پر مزدوروں کے قتل کا مقدمہ درج

بھارتی فوج کے تیس افسران اور جوانوں پر مزدوروں کے قتل کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے
بھارتی فوج نے گزشتہ برس ماہ دسمبر میں چھ مزدوروں کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا، اب ناگا لینڈ‌ کے پولیس سربراہ ٹی جی لونک کمیر کا کہنا ہے کہ مزدوروں کو قتل کرنے والے بھارتی فوجی افسروں اور جوانوں پر مقدمہ درج کیا گیا ہے ،بھارتی فوج کے جوانوں کی جانب سے فائرنگ کے بعد ایک کمیٹی تشکیل دی گئی تھی اس کمیٹی نے بھارتی فوجی اہلکاروں کو قصور وار ٹھہرایا ہے، بھارتی فوج کے جوانوں نے مقرر کردہ اصولوں پر عمل نہیں کیا، اندھا دھند فائرنگ کی ،کمیٹی میں قصور وار پائے جانے کے بعد اب مقدمہ درج کیا گیا ہے،

یہ واقعہ گزشتہ برس پیش آیا تھا جب میانمار کی سرحد پر بھارتی فوج نے ایک ٹرک پر فائرنگ کی تھی اور مزدورجو اپنے گھروں کو جا رہے تھے انکی موت ہو گئی تھی، جب مزدوروں کے اہلخانہ لاشیں لینے پہنچے اور بھارتی فوج کے خلاف احتجاج کیا تو ان پر بھی بھارتی فوج نے فائرنگ کر دی تھی، واقعہ پر امیت شاہ نے بھی کمیٹی بنانے اور تحقیقات کا اعلان کیا تھا، بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی فوج کی فائرنگ سے مرنیوالوں کا تعلق کونیاک قبیلے سے تھا ،واقعہ کے بعد ہزاروں شہریوں نے بھارتی فوج کے خلاف احتجاج کیا تھا

راہ چلتی طالبات کو ہراساں اور آوازیں کسنے والا اوباش گرفتار