بھارتی جیلوں میں کتنے پاکستانی قید، اسمبلی میں رپورٹ پیش

قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر قومی اسمبلی کی زیر صدارت جاری ہے. اسمبلی اجلاس میں ایوان کو بتایا گیا کہ بھارت میں 585 پاکستان مختلف جیلون میں قید ہیں.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق توجہ دلائو نوٹس پر عندلیب عباس نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ بھارت کی جیلوں میں مجموعی طور پر 585 قیدی ہیں،جن میں سے 210 ماہی گیر ہیں، انہون نے بتایا کہ چار ماہی گیر 14 مئی کو رہا ہو رہے ہیں ،پہلے خواتین اور بچوں کی رہائی کے لیے کوشش کی جا رہی ہے ،

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پلواما حملے میں پاکستان کا تعلق ثابت نہیں ہوا،پاکستان کی کبھی جارحیت کی پالیسی نہیں رہی، شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ پاکستانی ماہی گیروں اور قیدیوں کو بازیاب کرانا ہماری ترجیح ہے، ماہی گیروں کی شہریت کا پہلے تعین کرنا پڑتا ہے،ہم نے بھارتی حکومت سے متعلقہ فورمز پرمعاملہ اٹھایا ہے، شاہ محمودقریشی نے مزید کہا کہ ہم نے 300 سے زائد بھارتی ماہی گیروں کو رہا کیا،بھارت کے ساتھ کشیدگی میں کمی کیلیےابھینندن کو بھی رہا کیا ،ہم نے بھارت پر اخلاقی دباؤ ڈالنے کے لیے بھارتی قیدی رہا کیے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.