بھارتی وزیر داخلہ کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس، کشمیر سے متعلق کیا ہوئے فیصلے؟ اہم خبر

بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا ہے جس میں وزارت داخلہ کے اعلیٰ افسران، خفیہ ایجنسی کے عہدیداران سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی، اس موقع پر بھارتی قومی سلامتی کے مشیر اجیت دوول بھی موجود تھے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اجلاس میں کشمیر کی تازہ ترین صورتحال پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا، اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا ہے کہ امیت شاہ اگلے ہفتہ مقبوضہ کشمیر جائیں گے جہاں وہ پہلے جموں‌ جاکر ہندوانتہاپسند تنظیموں‌کے عہدیداران، فوجی کمانڈروں اور ریاستی گورنر سے ملیں گے، اسی طرح وہ وادی کشمیر بھی جائیں گے تاہم اس سے قبل بھارتی پارلیمنٹ کے سیشن میں جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت والی دفعات ختم کرنے کا بل پیش کئے جانے کی بھی اطلاعات ہیں جس پر ہونے والے احتجاج کے پیش نظر کشمیر میں اضافی فوج پہنچائی گئی ہے اور کشمیری قیادت کو نظربند یا جیلوں میں ڈال دیا گیا ہے،

رپورٹ کے مطابق امیت شاہ کی زیر صدارت اجلاس میں کشمیریوں کے احتجاج سے نمٹنے پر بھی تفصیل سے غوروفکر کیا گیا، واضح رہے کہ دو دن پہلے ہی حکومت نے ایڈوائزری جاری کرکے امرناتھ یاتریوں اور سیاحوں کو جموں‌کشمیر سے نکل جانے کی ہدایات جاری کی ہیں، امرناتھ یاتریوں کے بیس کیمپ سے بھی یاتریوں کو جانے کیلئے کہہ دیا گیا ہے،

یاتریوں اور سیاحوں کو واپس بلانے سے متعلق حکومت کی ایڈوائزری سے جموں و کشمیر کے عوام میں‌ خوف و ہراس کی کیفیت ہے اور وہ اس بات کا اندیشہ ظاہر کررہے کہ مودی حکومت آرٹیکل 35 اے کو ختم کرنے کا منصوبہ بنارہی ہے ۔ آرٹیکل 35 اے سرکاری نوکریوں اور زمین کے معاملات میں ریاست کے باشندوں کے خصوصی اختیارات دیتا ہے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.