fbpx

یورپ میں مہنگائی انتہا کوپہنچ گئی:لوگوں کا جینا مشکل ہوگیا

پیرس:یورپ میں مہنگائی انتہا کوپہنچ گئی:لوگوں کا جینا مشکل ہوگیا، اسکی پہلی وجہ کورونا وبا ہے اور دوسری وجہ یوکرین میں جنگ جاری ہے، اداس معاشی منظر نامہ یورپ بھر میں احتجاج کو متحرک کر رہا ہے۔ کئی یورپی ممالک میں مظاہرین تنخواہوں میں اضافے اور کام کے بہتر حالات کا مطالبہ کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔

برطانیہ میں دسیوں ہزار نرسیں پہلی بار ہڑتال پر جائیں گی، زندگی گزارنے کے اخراجات بڑھنے کے ساتھ ہی بہتر تنخواہ کا مطالبہ کر رہی ہیں۔

آرسی این کی طرف سے بلائی گئی صنعتی کارروائی سال کے اختتام سے پہلے شروع ہو جائے گی، جو اس کی 106 سالہ تاریخ میں بے مثال ہے۔

یونین کے نمائندوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ 10 سالوں میں نرسوں کی تنخواہوں میں حقیقی معنوں میں 20 فیصد تک کمی آئی ہے جس کی وجہ سے اراکین کو اپنے خاندان کا پیٹ پالنے اور اپنے بلوں کی ادائیگی میں مشکلات کا سامنا ہے۔

لندن کے ہیتھرو ہوائی اڈے پر سیکڑوں کارکن بہتر تنخواہ کے مطالبے پر رواں ماہ قطر میں ہونے والے فٹ بال ورلڈ کپ کے لیے واک آؤٹ کر رہے ہیں۔ 700 مزدور 18 نومبر سے تین دن تک ہڑتال کریں گے۔

یورپ کے تمام ممالک اس وقت اپنےمعاشی صورت حال سے اس قدرپریشان ہیں کہ ان کی سلامتی بھی داو پرلگی ہوئی ہے، یورپ کے اکثرممالک نے اپنی معاشی تباہی کا ذمہ دار روس کوقراردیا ہے، اس کی وجہ توانائی کی فراہمی میں‌تعطل اور پھرگیس ،پٹرول اور دیگر توانائی کے ذرائع کی قیمتوں‌ میں ناقابل برداشت حد تک اضافے کو بھی قراردیا جارہا ہے

شوکت خانم کے باہر سے مشکوک شخص گرفتار

جس کو پنجاب کا سب سے بڑا ڈاکو کہتا تھا اسے ڈاکو کی وزارت اعلیٰ کے نیچے عمران خان پر حملہ ہوا