fbpx

ایران میں کھانے پینے کی اشیا میں اضافے کے خلاف مظاہرے،6 افراد ہلاک متعدد زخمی

تہران: ایران کے مختلف علاقوں میں کھانے پینے کی اشیا میں اضافے کے خلاف مظاہروں میں 6 افراد ہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے۔

باغی ٹی وی : غیرملکی میڈیا کے مطابق اصفہان سمیت مختلف صوبوں میں ہزاروں افراد نے کھانے پینے کی اشیا کی قیمتوں میں 300 فیصد اضافے کے خلاف احتجاج کیا مظاہرین نے مہنگائی پرقابوپانے میں ناکامی پرایرانی صدراورحکومت سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا-

پیٹرول اور ڈیزل کی قیمت بڑھائے بغیر معیشت دم توڑ جائے گی،مریم نواز

ایران میں انڈے، دودھ، چکن کے گوشت سمیت دیگرضروری اشیا کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف مختلف شہروں میں مظاہرے جاری ہیں۔ پولیس اورمظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں 6 افراد ہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے۔

طیش میں آکرکمپنی کا سارا ڈیٹا بیس اڑانے والے آئی ٹی ایڈمنسٹریٹر کو سات برس قید کی…

پولیس نے مظاہرین کومنتشرکرنے کے لئے آنسوگیس اورلاٹھی چارج کا استعمال کیا جبکہ متعدد مظاہرین کو گرفتارکرلیامظاہرین نے قیمتوں میں کمی تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کیا ہےایران میں مہنگائی کیخلاف گزشتہ ہفتے سے احتجاج کیا جارہا ہے۔

خاتون نےشوہر کی وفات کے بعد بیٹی کی پرورش کے لئے مرد کا حلیہ اپنالیا

دوسری جانب دبئی میں بھی اشیاء کی قیمتیں مہنگی ہو گئی ہیں دبئی میں ایسی بہت سی چیزیں ہیں جنکو کئی لوگ نہیں خرید پا رہے، دبئی میں زندگی کی چھپی تمام خوشیاں مل سکتی ہیں، دبئی میں ناقابل یقین حد تک مہنگی چیزیں سامنے آئی ہیں پانی کی کاریں، تخمینہ قیمت: $135,000*، تیار کردہ: واٹر کار

چینی سائنسدانوں کومریخ پر پانی کی موجودگی کے شواہد مل گئے

اگرچہ واٹر کار ایک امریکی کمپنی کی ہے لیکن یہ دبئی میں مقبول ہے۔ واٹر کار لگژری ایمفیبیئس کاریں بنانے اور تیار کرنے میں مہارت رکھتی ہے۔ کمپنی کی بنیاد 1999 میں ڈیو مارچ نے رکھی تھی، جو 1960 کی دہائی کی ایمفی کار سے اس قدر متاثر ہوئے کہ اس نے واٹر کار تیار کی۔پہلی کمرشل واٹر کار عوام کے لیے 2013 میں دستیاب ہوئی ، دبئی کے ولی عہد شیخ حمدان بن محمد المکتوم کے پاس چھ ماڈل کاریں ہیں۔ یہ کاریں پانی میں صرف 10 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چلتی ہے، پہیے ہائیڈرولک آف روڈ سسپنشن کے ذریعے پیچھے ہٹ جاتے ہیں۔

امریکا میں لڑائی جھگڑے اورقتل وغارت عروج پر:ٹارگٹڈ فائرنگ سے10سیاہ فام شہری ہلاک