عراق میں‌حزب اللہ بریگیڈز ریاست کے لیے چیلنچ بن گئی

عراق میں‌حزب اللہ بریگیڈز نے ہتھیار ڈالنے سے انکار کردیا

باغی ٹی وی :عراق میں ایران نواز مسلح ملیشیا حزب اللہ بریگیڈز نے ریاست کو چیلنج کرتے ہوئے باور کرایا ہے کہ وہ اپنے ہتھیار ہر گز حوالے نہیں کرے گی۔

اس بات کا اعلان عراقی حزب اللہ بریگیڈز کی ویب سائٹ پر جاری بیان میں کیا گیا۔ بیان کو ملیشیا کے سکریٹری جنرل سے منسوب کیا گیا ہے۔اس سے قبل عراق میں امریکی مفادات پر حملوں کے الزام میں گرفتار ہونے والے 14 عسکریت پسندوں کو رہا کر دیا گیا۔ رہائی پانے والے ایرانی حمایت یافتہ عسکریت پسندوں کو گذشتہ جمعرات کے روز گرفتار کیا گیا تھا۔راق کے ایران نواز گروپ حزب اللہ بریگیڈز کے ترجمان جعفر الحسینی نے بتایا کہ ٹھوس ثبوت اور شواہد نہ ہونے پر تنظیم کے چودہ ارکان کو رہا کر دیا گیا ہے۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ گرفتار کارکنوں پر الزام ایک سازشی چال تھی اور حزب اللہ بریگیڈز اس سازش پر وزیراعظم مصطفیٰ الکاظمی کے خلاف عدالت سے رجوع کرے گی۔

دوسری طرف حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتار کیے گئے جنگجوؤں کو ضمانت پر رہا کیا گیا ہے۔ تاہم سرکاری ذرائع نے گرفتار ہونے والے عسکریت پسندوں کے ناموں کی تفصیل بیان نہیں کی۔

امریکا نے عراق میں اپنے سفارت خانوں اور عراقی اڈوں میں امریکی افواج کے خلاف حملے کرنے کے حوالے سے ایران نواز عراقی ملیشیا "حزب الله بریگیڈز” کو ملامت کا نشانہ بنایا۔ ساتھ ہی عراقی حکومت پر بھی تنقید کی گئی کہ اس نے مجرموں کا تعین نہیں کیا اور نہ انہیں گرفتار کیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.