fbpx

اسلام آباد:پولیس نے تشدد کرکے ملزم کوجان سے مارنے کے بعد "مٹّی” ڈال دی

اسلام آباد:پولیس نے تشدد کرکے ملزم کوجان سے مارنے کے بعد "مٹّی” ڈال دی ،اطلاعات کے مطابق اسلام آباد تھانہ س ٹی ڈی میں حراست کے دوران ملزم کو تشدد سے ہلاک کرنے کا انکشاف ہوا ہے

اسلام آباد سے ذرائع کے مطابق ملزم کی حوالات میں پراسرار موت واقع یوئی ہے ائی جی پولیس اسلام آباد نے انکوائری کا حکم دے دیا ہے لواحقین نے آئی جے پرنسپل روڈ پر لاش رکھ کر احتجاج شروع کر دیا ہے

تفصیلات کے مطابق حسن نامی ملزم کو تفتیش کے لیے سی ٹی ڈی تھانے منتقل کیا گیا تھا لواحقین کےمطابق حسن کو شدید بخار تھا اس کو جان بوجھ کر حبس اور شدیدگرمی رکھا گیا اور اس پر بہیمانہ تشدد کیا گیا تشدد سے ہمارا بھائی ہلاک ہوا ہے ہمارے بھائی کے جسم پر تشدد کے نشانات موجود ہیں

ذرائع کےمطابق لواحقین کا کہنا ہے کہ پولیس نے ایک ہفتہ قبل ہمارے بھائی کو گرفتار کیا تھا ہمارا بھائی کہتا رہا کہ مجھے ہسپتال شفٹ کرو لیکن ایس ایچ او سی ٹی ڈی فیاض رانھجا نے کہا کہ ملزم فریب سے کام لے رہا ہے پولیس نے تشدد کرکے ہمارے بھائی کو موت کے گھاٹ اتار دیا ہے

مقتول حسن کے لواحقین نے وزیراعظم سے مطالبہ کیا ہے کہ پولیس ملزمان جنہوں نے ہمارے بھائی کو قتل کیا ان کے خلاف فوری کاروائی کرتے ہوئے ان کو گرفتار کیا جائے

دوسری طرف پولیس کا کہنا ہے کہ تھانہ بارہ کہو کے ایس ایچ او حبیب الرحمن کی مدعیت میں ایس ایچ او انسپکٹر فیاض الاکبر کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے لیکن تاحال ملزمان کو گرفتار نہیں کیا گیا لواحقین کا کہنا ہے کہ پولیس اپنے پیٹی بھائیوں کو بچانے کے لیے سرگرم عمل ہے

لواحقین نےکا کہنا ہے کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ کیس کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائی جائیں اور ملزمان کو قتل کی دفعات کے تحت پھانسی کی سزا دلوائی جائے لواحقین نے لاش سڑک پر رکھ کر روڈ بلاک کر دیا ہے اور ملزمان کی گرفتاری تک احتجاج جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے*