fbpx

اٹلی میں گلیشیئر گرنے سے سات افراد ہلاک ،متعدد زخمی

اٹلی: اطالوی ایلپس کے ڈولومائٹس نامی علاقے میں مارمولڈا گلیشیئر ٹوٹنے سے 7 افراد ہلاک متعدد زخمی ہوگئے۔

باغی ٹی وی : "بی ی سی ” کے مطابق شمالی اطالوی الپس میں ایک گلیشیئر کے گرنے سے پیدا ہونے والے برفانی تودے میں دب کر کم از کم سات افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

پاکستان میں سعودی سفیر کا دورہ سوات، جڑواں بہنوں سے ملاقات

ایمرجنسی حکام نے بتایا کہ گرنے سے آٹھ دیگر زخمی ہوئے، جن میں دو افراد کو شدید چوٹیں آئیں۔
اٹلی کے وزیر اعظم ماریو ڈریگی نے کہا کہ یہ واقعہ "بلا شبہ” موسمیاتی تبدیلی سے منسلک ہے ہلاک ہونے والے سات میں سے چار کی شناخت امدادی کارکنوں نے کی ہے، جن میں سے تین اطالوی ہیں، جن میں دو پہاڑی رہنما بھی شامل ہیں۔

ہنگامی خدمات کی ترجمان میشیلا کینووا نے کہا کہ برف اور چٹان کا ایک برفانی تودہ جو اپنے راستے میں اس وقت تک رسائی والی سڑک سے ٹکرا گیا جب وہاں کئی رسی والی پارٹیاں تھیں، جن میں سے کچھ بہہ گئیں۔” انہوں نے مزید کہا کہ "شامل ہونے والے کوہ پیماؤں کی حتمی تعداد ابھی تک معلوم نہیں ہے۔”

ریسکیو حکام نے بتایا کہ زخمی پیدل سفر کرنے والے جن میں دو افراد بھی شامل ہیں جن کی حالت تشویشناک ہے، انہیں علاقے کے آس پاس کے متعدد اسپتالوں میں لے جایا گیا یہ فوری طور پر واضح نہیں ہے کہ گلیشیئر کا حصہ، جسے سیرک کہا جاتا ہے، کے گرنے کی وجہ کیا ہے۔

عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمت 380 ڈالر فی بیرل تک پہنچنے کا خدشہ ہے،امریکی تجزیہ کار

لیکن ریسکیو سروس کے ترجمان والٹر میلان نے سرکاری ٹی وی کو بتایا کہ علاقے میں حالیہ دنوں میں غیر معمولی حد تک درجہ حرارت بڑھ رہا ہے گرمی غیر معمولی ہےمسٹر میلان نے کہا، حالیہ دنوں میں گلیشیئر کی چوٹی پر درجہ حرارت 10C تک پہنچ گیا ہے یہ شدید گرمی ہے،واضح طور پر یہ کچھ غیر معمولی ہے۔

مسٹر ڈریگی نے کہا، یہ ایک المیہ ہے جس میں یقینی طور پر ایک غیر متوقع عنصر موجود تھا لیکن اس کا تعلق ماحول کی خرابی اور آب و ہوا کی صورتحال سے بھی ہے۔”

خطے کے دورے پر، انہوں نے یہ بھی کہا کہ حکومت اسی طرح کے ایک اور سانحے کو رونما ہونے سے روکنے کے لیے اقدامات کرے گی۔حادثے کے وقت خطے میں کوہ پیما یا سیاح موجود تھےلیکن تعداد کے بارے میں کوئی معلومات نہیں،تاہم امداد حکام کا کہنا ہے کہ مرنے والوں میں غیر ملکی باشندے شامل ہیں۔

روس کا ایک اوریوکرینی شہر کا کنٹرول حاصل کرنے کا دعویٰ

دوسری جانب ملک میں ہنگامی امدادی ادارے کی ترجمان کا کہنا ہے کہ کئی سیاح رسیوں کی مدد سے گلیشیئر کی چوٹی پر پہنچنے کے لیے درمیانی گزرگاہ پر موجود تھے، جب برفانی تودہ ٹوٹ کر ان پر آ گرا، ان میں سے کچھ برفانی تودے کے ساتھ نیچے گرتے ہوئے برف میں دب چکے ہیں۔

ابتدائی امدادی کارروائیوں میں کئی ہیلی کاپٹرز نے حصہ لیا تاہم خراب موسم کے باعث امدادی کارروائیاں روکنا پڑیں حکام کے مطابق ان کو متاثرین کی مدد کرنے میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ زیادہ تر لاشیں برفانی تودے کے نیچے دب گئیں تھیں۔

ریسکیو حکام کی جانب سے ایک ٹول فری نمبر بھی جاری کیا گیا ہے، جس پر رابطہ کر کے لوگ معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔

اقوام متحدہ کی رواں سال جاری کردہ رپورٹ کے مطابق برف کا پگھلنا گلوبل وارمنگ اور ماحولیاتی نظام کو درہم برہم کرنے والی 10 بڑی وجوہات میں سے ایک ہے۔

بھارت: بس کھائی میں گرنے سے اسکول بچوں سمیت 16 افراد ہلاک،متعدد زخمی