fbpx

پاکستانی فلموں کی ریلیز کا معاملہ :جاوید شیخ کا وزیر اعظم سے معاملے پر ایکشن لینے کا مطالبہ

آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی اور فلم پروڈیوسز ایسوسی ایشن کے مشترکہ تعاون سے فلم انڈسٹری کی موجودہ صورت حال پر اہم پریس کانفرنس کی گئی جس میں پاکستان فلم پروڈیوسر زایسوسی ایشن نے حکومت سے سینما گھروں میں پاکستانی فلموں کے شوز کی بحالی کا مطالبہ کردیا۔

باغی ٹی وی : پریس کانفرنس میں صدر آرٹس کونسل محمد احمد شاہ، اداکار جاوید شیخ،اداکار و ہدایت کار یاسر نواز، ندا یاسر،عدنان صدیقی،وجاہت روف ،شازیہ وجاہت،ستیش آنند،امجد رشید اور بدر اکرام نے بریفنگ دی-

کورونا وبا کے مشکل ترین دور کے بعد عید پر 4 فلمیں ریلیز ،ملک بھر کے سینماؤں کی…

اداکار جاوید شیخ نے وزیر اعظم شہباز شریف سے معاملے پر ایکشن لینے کا مطالبہ کردیا انہوں نے کہا کہ آپ آج ہی ایکشن لیں اور ہماری پاکستان فلم انڈسٹری کو بچائیں مریم اورنگزیب کو بلائیں اور ان سے تفصیلات پوچھیں یہ آج تک انڈسٹری میں نہیں ہوا کہ 3 دن پاکستانی فلمیں لگنے کے بعد انہیں بغیر بتائے ہوئے اتار دیا یہ کیسے ہو سکتا ہے –

جاوید شیخ نے کہا کہ عدنان ،وجاہت ،ندا اور یاسر یہ اپنے پیسے کسی اور چیز میں لگاسکتے ہیں وہ سینما میں لگارہے ہیں رسک لے رہے ہیں ہمیشہ پاکستانی عوام کو پاکستانی فلموں سے گلہ تھا کہ فلمیں اچھی نہیں بناتے میوزک اچھا نہیں ہوتا ساؤنڈ اچھا نہیں ہوتا کمیرے اور لائٹ اچھی نہیں ہوتی اب آپ فلمیں جا کر دیکھیں یہ ساری اس قابل ہیں کہ آپ ان فلموں کو کسی بھی ہندوستانی فلم کے سامنے لگا سکتے ہیں-

انہوں نے کہا کہ یہ ہمارے لئے فخر کی بات ہے کہ اتنے ک عرصے میں ہم اپنے پاؤں پر کھڑے ہوئے اور اس وقت اگر ہماری انڈسٹری کے ساتھ یہ ہو گا کہ فلم بتائے بغیر سینماؤں سے اتار دیں تو کہیں بھی نہیں رہیں گے بریکنگ نیوز یہ ہے آج کی ہماری نیوز تمام چینلز اور صحافی لگائیں تاکہ وزیر اعظم تک یہ بات پہنچے آپ ہمارے پاؤں مضبوط کریں نام بنے گا ہمارا پوری دنیا میں پچھلی عیدوں پر یہ ہوتا تھا کہ ایک ہفتے کا وقت ملتا تھا-

مسلسل تیسرے سال بھی سلمان خان کی کوئی فلم عید پر ریلیز نہ ہوسکی

چیئرمین پاکستان فلم پروڈیوسر ایسوسی ایشن امجد رشید نے کہا کہ ہم نے بطور چیئرمین پروڈیوسر ایسوسی ایشن اس کو شروع سے اینٹی سپیٹ کیا تھا یہ جو فلم آرہی ہے یہ ہماری فلموں کو ڈیمج کرے گی ہم نے شروع سے ہی کوشش شروع کردی تھی کہ جو گورنمنٹ کے لوگ ہیں اسٹیک ہولڈرہیں ان سے ایک میٹنگ ہو جو ہمارا پوائنٹ آف ویو ہے سیریس پوائنٹ آف ویو ہے یہ ان کو کمیونی کیٹ ہو سارے معاملے پر مریم اورنگزیب کو خطوط بھی لکھے مگر کوئی حل نا نکل سکا ۔

فلم دم مستم کے پروڈیوسر عدنان صدیقی نے کہا کہ کل کو فلم بنانے سے پہلے سوچوں گا ہمیں عوام سے سپورٹ ملی ہمیں سینما اور حکومت سے سپورٹ نہیں ملی وہ فلم جس کے ہم بھی فین ہیں پانچ دن بعد لگتی ہم اسے دیکھنے نہیں جاتے ہم نے اپنی جمع پونجھی لگائی ہے ہم سب کی فلمیں کمارہی ہیں ایسا نہیں ہے کہ سینما خالی ہیں۔

فلم چکر کے پروڈیوسر یاسر نواز اور ندا یاسر نے بھی موجودہ صورتحال پر تشویش کا اظہار کیاندا یاسر نے کہا کہ ہمیں عوام سے سپورٹ ملی لیکن ہمیں سینما اور حکومت سے سپورٹ نہیں ملی۔

یاسر نواز کا کہنا تھا کہ فلم کی پروموشن میں دن رات ایک کردئیے ہماری فلم اتار کر ہالی ووڈ فلم لگادی اس سے بہتر ہم ڈرامہ بنالیتے اور ایکٹنگ کرتے۔

صبا قمر کو ساتھی اداکار مغرور کیوں سمجھتے ہیں؟ اداکارہ نے حقیقت سے پردہ اٹھا دیا

فلم پردے میں رہنے دو کے پروڈیوسر وجاہت رؤف نے کہا کہ کسی بھی فلم کو بین نہیں کرانا چاہتے ریگولیٹ کرانے کے خواہشمند ہیں۔

سربراہ ہم فلمز بدر اکرام کا کہنا تھا کہ عید پر چار بڑی پاکستانی فلموں کے لیے صرف چار دن مانگے تھے منسٹری نے یقین دہانی بھی کرائی تھی لیکن کل تین بجے کے بعد سے ہمارے شوز ڈراپ کردئیے گئے-

واضح رہے کہ رید الفطر پر 4 پاکستانی فلمیں ریلیز ہوئیں جنہیں عوام کی جانب سے بھر پور پذیرائی ملی فلمی شائقین دو سال بعد پہلی بار عید کے موقع پر سینما گھروں میں مقامی فلمیں دیکھنے پہنچے چاروں فلموں کو کہانی اور کاسٹ سمیت ان کے گانوں کی وجہ سے کافی سراہا جا رہا ہے-

زیادہ تر فلمی ناقدین نے ’پردے میں رہنے دو‘ اور ’گھبرانا نہیں ہے‘ کے سپر ہٹ ہونے کی پیش گوئیاں کی ہیں اور مبصرین کا کہنا تھا کہ اگرچہ چاروں فلمیں اچھی کمائی کرنے میں کامیاب جائیں گی مگر صبا قمر اور ہانیہ عامر کی فلمیں باقی دو فلموں کو کمائی میں پیچھے چھوڑ دیں گی صبا قمر کی ’گھبرانا نہیں ہے‘ اور ہانیہ عامر کی ’پردے میں رہنے دو‘ کو کہانی کی وجہ سے بھی کافی سراہا جا رہا ہے۔

سینیما کی بحالی کے بعد کتنے کروڑ سعودی شہری فلم دیکھ چکے ہیں؟