fbpx

جسم فروشی کے اڈے سے غیر ملکی لڑکیاں کروائی گئیں بازیاب

جسم فروشی کے اڈے سے غیر ملکی لڑکیاں کروائی گئیں بازیاب

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بھارت میں جسم فروشی کا چند روز قبل عدالت نے قانونی تحفظ دیا ہے تو دوسری جانب پولیس جسم فروشی کے اڈوں کے خلاف کاروائیاں کر رہی ہے

بھارتی ریاست چھتیس گڑھ کے دارالحکومت رائے پور میں جسم فروشی کے ایک اڈے پر چھاپہ مارا گیا پولیس نے نیپال سے تعلق رکھنے والی خاتون کو گرفتار کیا ہے جو اڈے کی نائیکہ تھی، پولیس کے مطابق خاتون ایک طویل عرصے سے قحبہ خانہ چلا رہی تھی، خاتون ہوٹلوں، گیسٹ ہاؤسز میں بھی لڑکیاں ڈیمانڈ پر سپلائی کرتی تھی، اس نے اپنا واٹس ایپ نمبر اپنے گاہکوں کو دیا ہوا تھا، لڑکی کی تصویر بھیج کر ریٹ طے ہوتا اور پھر لڑکی گاہک کے حوالے کر دی جاتی،

پولیس کے مطابق لڑکیوں کو نشہ بھی کروایا جاتا ہے، خاتون کے ساتھ 15 لڑکیاں بھی گرفتار ہوئی ہیں جو اسکے ساتھ کام میں ملوث ہیں اور انہی لڑکیوں سے خاتون گھناؤنا کام کرواتی تھی پولیس کے مطابق جسم فروشی کے اڈے سے دو مردوں کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جو ایجنٹ کے طور پر کام کر رہے تھے، اڈے سے 14 موبائل فون ،نقدی بھی برآمد کی گئی ہے، پولیس نے ملزمان کے خلاف دفعہ تین ، چار،پانچ ، سات کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے،

پولیس کے مطابق تحقیقات کے دوران انکشاف ہوا کہ نیپالی خاتون خود بسنت کنج دہلی میں رہتی ہے اور طویل عرصے سے مکروہ دھندہ کر رہی ہے خاتون کا نیٹ ورک وسیع ہے وہ نہ صرف دیگر ریاستوں بلکہ قریبی ممالک میں بھی لڑکیاں سپلائی کرتی ہے، اسکا نیٹ ورک موجود ہے جو منشیات کے ساتھ ساتھ جسم فروشی کے لئے لڑکیاں بھی سپلائی کرتا ہے

علاوہ ازیں ایک اور جگہ پردہلی پولیس نے چھاپہ مارا ہے جہاں سے غیر ملکی جوڑے سمیت پانچ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے . گرفتار ملزمان کی شناخت ترکمانستانی جوڑے میردوب احمد عمر 48 سال، اسکی بیوی عزیزہ عمر 35 سال، ازبکستان کے رہائشی علی شیر عمر 48 سال، اریب سکنہ دہلی اور چندے سہانی عمر 30 سال کو گرفتار کیا گیا ہے،پولیس نے چھاپے کے دوران 10 ازبکستانی لڑکیوں کو بھی بازیاب کروایا ہے جن سے جسم فروشی کا گھناؤنا کام کروایا جا رہا تھا، ملزمان نوکری کے بہانے لڑکیوں کو بھارت لاتے اور بھارت میں لا کر جسم فروشی کرواتے،

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان سے تحقیقات جاری ہیں، پولیس کو جب پتہ چلا کہ غیر ملکی لڑکیاں اس علاقے میں دستیاب ہین اور مکروہ دھندہ چل رہا ہے تو پولیس نے اپنے دو ایجنٹ بھیجے جو گاہک بن کر گئے، پولیس کی جانب سے پولیس اہلکار ہی ایجنٹ بن کر گئے تھے، بعد ازاں معلومات ملنے کے بعد ہی چھاپہ مارا گیا اور ملزمان کو گرفتار کیا گیا

پولیس کے مطابق دوران تفتیش یہ بات سامنے آئی کہ کسی بھی غیر ملکی لڑکی کے پاس پاسپورٹ یا ویزا نہیں، اس اڈے کو ترکمانستانی جوڑا چلا رہا تھا، تین ساتھی بھی انکے ساتھ تھے جو بیرون ممالک سے لڑکیاں منگواتے اور پھر انکو جسم فروشی کے کام پر لگا دیتے،

 پاکستان کی اہم خاتون کو جسم فروشی کی پیشکش کی گئی ہے جس پر خاتون نے کھری کھری سنا دیں

سفاک دیور نے بھابھی کو ہی جسم فروشی کے دھندے میں لگا دیا

لاک ڈاؤن ختم کیا جائے، شوہر کے دن رات ہمبستری سے تنگ خاتون کا مطالبہ

لاک ڈاؤن، فاقوں سے تنگ بھارتی شہریوں نے ترنگے کو پاؤں تلے روند ڈالا

بیرون ملک سے لڑکی کی جسم فروشی کے لئے پاکستان سمگلنگ،عدالت نے کس کو کیا طلب؟

شوبز سے وابستہ لڑکیوں سے کروائی جا رہی جسم فروشی، 60 ہزار میں ہوتا ہے "سودا”