جو بائیڈن کی فتح پرسی این این کےمیزبان نشریات کےدوران آبدیدہ تودیکھنے والےبھی آبدیدہ ہوگئے

واشنگٹن :جو بائیڈن کی فتح پرسی این این کے میزبان نشریات کے دوران آبدیدہ ہوگئے،اطلاعات کے مطابق جہاں ایک طرف نومنتخب امریکی صدر جوبائیڈن کی فتح پرجشن منائے جارہے ہیں وہاں عالمی نشریاتی ادارے سی این این کے نمائندے کے آبدیدہ ہونے کے مناظرنے دنیا کوحیران کردیا

معروف نشریاتی ادارے دی سن کی رپورٹ کے مطابق جب صحافی اینڈرسن کوپر نے ڈیموکریٹ امیدوار کی فتح پر انہیں تاثرات بیان کرنے کا کہا تو وانز جونز روتے ہوئے بولے کہ ‘ میں صرف چاہتا ہوں کہ میرا بیٹا یہ دیکھے’۔

جب سی این این نے انتخاب میں جو بائیڈن کی کامیابی کا اعلان کیا تو وان جونز بہت زیادہ جذباتی ہوگئے تھے، انہوں نے رونا شروع کردیا تھا۔اس کے بعد انہوں نے ٹشو سے اپنی آنکھوں اور چہرے سے آنسو صاف کیے۔

انہوں نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ آج صبح والدین ہونا آسان ہے، باپ ہونا آسان ہے، اپنے بچوں کو یہ بتانا آسان ہے کہ کردار اہمیت رکھتا ہے، یہ اہمیت رکھتا ہے۔وان جونز نے مزید کہا کہ سچ کہنا، اچھا بننا اہمیت رکھتا ہے اور اب یہ بہت سے لوگوں کے لیے آسان ہے۔

 

امریکی میزبان نے کہا کہ ‘ اگر اس ملک میں آپ مسلمان ہیں، تو آپ کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے کہ صدر کو آپ کا یہاں ہونا پسند نہیں’۔

 

اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ‘ اگر آپ تارکین وطن ہیں تو آپ کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں کہ صدر اس بات پر خوش ہوگا کہ آپ سے آپ کا بچہ چھین لیا جائے، یا لوگوں کی آنکھوں سے خواب چھین کر انہیں کسی وجہ کے بغیر واپس بھیج دے’۔

وان جونز نے کہا کہ ‘ یہ ان بہت سے لوگوں کے لیے خاص موقع ہے جو مشکلات کا شکار ہوئے’۔انہوں نے مزید کہا کہ ‘میں سانس نہیں لے سکتا’ یہ صرف جارج فلائیڈ کے لیے نہیں تھا، ایسے بہت سے لوگ تھے جنہوں نے محسوس کیا کہ وہ سانس نہیں لے پارہے تھے۔

وان جونز نے کہا کہ ہر روز آپ جاگتے ہیں، آپ یہ ٹوئٹس دیکھ رہے ہیں اور آپ اسٹور جارہے ہیں اور وہ لوگ جو اپنی نسل پرستی کو ظاہر کرنے خوفزدہ ہیں تو وہ سب سے زیادہ ناگوار ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم سب کے لیے کچھ امن حاصل کرنا اور سب ٹھیک ہونے کا موقع ملنا بہت بڑی بات ہے، ملک کا کردار اہمیت رکھتا ہے اور اچھا ہونا اہمیت رکھتا ہے۔

اس سے قبل 2016 کے انتخاب کے دوران جب ڈونلڈ ٹرمپ ہیلری کلنٹن کے مقابلے میں کامیاب ہوئے تھے تب ہی انہوں نے اپنے جذبات کا اظہار کیا تھا۔انہوں نے کہا تھا کہ میں اپنے بچوں کو یہ کیسے بتاؤں گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.