fbpx

جوبائیڈن کا 9/11 حملوں سے متعلق خفیہ دستاویزات جاری کرنےکا حکم

امریکی صدر جوبائیڈن نے 11 ستمبر 2001 کو ورلڈ ٹریڈ ٹاور پر ہونے والے حملوں سے متعلق خفیہ دستاویزات جاری کرنےکا حکم دے دیا امریکی صدر کی جانب سے حکومتی تحقیقات کی خفیہ دستاویزات اگلے 6 ماہ میں جاری کرنےکے حکم نامے پر دستخط کر دیے گئے ہیں۔

باغی ٹی وی : غیر ملکی خبر رساں ادارے "الجزیرہ” کے مطابق ا مریکی صدر جو بائیڈن نے محکمہ انصاف اور دیگر ایجنسیوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ 11 ستمبر 2001 کے حملوں کی ایف بی آئی کی تحقیقات سے متعلق دستاویزات کو چھ ماہ تک جاری رکھنے کا عمل شروع کریں۔

نائن الیون کے سازشی نظریات پر یقین رکھتا ہوں آسکر ایوارڈ یافتہ ہالی ووڈ…

اس حوالے سے گفتگوکرتے ہوئے اپنے ایک بیان میں صدر بائیڈن نے تاکید کی کہ محکمہ انصاف اور دیگر ایجنسیاں دستاویزات جاری کرنےکے جائزے کی نگرانی کریں۔

صدر جوبائیڈن کا کہنا تھا ہمیں 2 ہزار 977 بےگناہ لوگوں کے خاندانوں کے درد کو نہیں بھولنا چاہیے، یہ لوگ امریکا کی تاریخ کے بدترین دہشتگرد حملے میں مارےگئے ہیں۔

امریکہ کے لئے مزید شرمندگی: طالبان نےامریکی فوجی سازوسامان ایران کے حوالے کر دیا

جمعہ کو یہ اقدام القاعدہ کے حملوں کی 20 ویں برسی سے کچھ دن پہلے آیا پہلے جواب دہندگان اور تقریبا 3،000 3 ہزار متاثرین کے لواحقین نے صدر کو سخت الفاظ میں خط لکھا۔ انہوں نے امریکہ پر جان بوجھ کر دستاویزات رکھنے کا الزام لگایا-جو کہ وہ ثابت کرتے ہیں کہ سعودی حکومت کے اہلکاروں نے القاعدہ کے حملہ آوروں کی مدد کی تھی۔

"بائیڈن نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا کہ میں نے 11 ستمبر 2001 کو امریکہ پر ہونے والے دہشت گردانہ حملوں کے بارے میں دستاویزات کی ڈیکلیسیشن کے حوالے سے شفافیت کو یقینی بنانے کا عہد کیا۔ جیسا کہ ہم اس المناک دن کی 20 ویں سالگرہ کے قریب پہنچ رہے ہیں ، میں اس عزم کا احترام کر رہا ہوں –

امریکا میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی

انہوں نے کہا کہ آج ، میں نے ایک ایگزیکٹو آرڈر پر دستخط کیے جو محکمہ انصاف اور دیگر متعلقہ ایجنسیوں کو فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن کی 11 ستمبر کی تحقیقات سے متعلق دستاویزات کے غیر درجہ بندی ریویو کی نگرانی کرنے کی ہدایت کرتا ہے۔ ایگزیکٹو آرڈر میں اٹارنی جنرل سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ اگلے چھ ماہ کے دوران ڈس کلاسیفائیڈ دستاویزات کو عوامی طور پر جاری کرے۔

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی عمارت پر طیارہ گر گیا