جونی ڈیپ کا ہالی وڈ میں کیرئیر ختم ہو گیا امریکی وکیل کا دعوٰی

ہالی وڈ‌کے معروف اداکارجونی ڈیپ کے برطانوی عدالت میں ’بیوی پر تشدد‘ کا مقدمہ اخبار سے ہارنے اور اپنی اہلیہ امبر ہیرڈ کےساتھ تشدد کےالزامات سے متعلق مقدمات کو لے کر ایک امریکی وکیل نے دعویٰ کیا ہے کہ اداکار کا ہالی وڈ میں کیریئر ختم ہوگیا ہے۔

باغی ٹی وی :خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کی رپورٹ کے مطابق جونی ڈیپ کو وارنر برادرز کی جانب سے فلم ’فنٹاسٹک بیسٹس‘ سے فارغ کردیا گیا ہے لندن ہائی کورٹ کی جانب سے ان کے خلاف فیصلہ سنائے جانے کے بعد ان کی آنے والی فلم فانٹیسٹک بیٹس‘ کی پروڈکشن کمپنی نے ان سے فلم سے الگ ہونے کی درخواست کی تھی۔

اداکار نے بتایا کہ انہوں نے حالیہ حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے پروڈکشن کمپنی کی درخواست کا احترام کیا اور فلم سے علیحدگی اختیار کرلی۔

تاہم اب اس سے متعلق ایک نامور وکیل نے دعویٰ کیا ہے کہ انھیں اپنی اہلیہ امبر ہیرڈ کو پیٹنے کے سلسلے میں ٹرائل کا سامنا ہے اور اسی وجہ سے انھیں فلم سے علیحدہ کردیا گیا ہے۔

ہالی وڈ میں ہر مرتبہ ایک نیا کردار نبھانے والے جونی سے پروڈکشن کمپنی وارنر برادرز نے درخواست کے ذریعے انھیں مجبور کیا کہ وہ فلم سے علیحدہ ہوجائیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جونی ڈیپ پہلے ہی فنٹاسٹک بیسٹس کے کچھ سینز کی عکس بندی بھی کروا چکے ہیں۔

جونی ڈیپ جو فلم میں گیلرٹ گرندیل والڈ کا کردار نبھارہے تھے اب ان کی جگہ کسی اور کو یہ کردار دیے جانے کا امکان ہے۔

تاہم اس حوالے سے ایک میڈیا وکیل مارک اسٹیفنز نے دعویٰ کیا کہ فلم سے علیحدہ ہونے پر ہالی وڈ میں جونی ڈیپ کا کیریئر ختم ہوسکتا ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ یہ 57 سالہ اداکار کے لیے تباہ کن ہوسکتا ہے انھیں اب ہمیشہ ’اپنی بیوی کے ساتھ مار پیٹ کرنے والے‘ کے نام سے جانا جائے گا۔

واضح رہے کہ اپنے ایک بیان میں جونی ڈیپ نے کہا تھا کہ وہ اس عدالتی فیصلے کے خلاف بھی جنگ کریں گے میری زندگی اور کیریئر اس لمحے کے طور پر نہیں جانا جائے گا۔

خیال رہے کہ حال ہی میں امریکی اداکار جونی ڈیپ برطانوی اخبار سن کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ ہار گئے تھے۔جونی ڈیپ رواں ماہ 2 نومبر کو لندن ہائی کورٹ میں برطانوی اخبار ’دی سن‘ کے خلاف دائر کیا گیا ہتک عزت کا مقدمہ ہار گئے تھے جونی ڈیپ نے برطانوی اخبار پر 2018 میں اپنے خلاف ایک مضمون شائع کرنے پر 2 لاکھ یورو کا مقدمہ دائر کیا تھا۔

جونی ڈیپ اور امبر ہرڈ نے 2015 میں شادی کی تھی تاہم 2016 میں 34 سالہ امبر ہرڈ نے جونی ڈیپ پر تشدد کا الزام لگانے کے بعد طلاق کے لیے عدالت سے رجوع کیا تھا اور دونوں کے درمیان 2017 میں طلاق ہوگئی تھی۔

دونوں میں طلاق ہونے کے بعد متعدد نشریاتی اداروں میں جونی ڈیپ کی جانب سے امبر ہرڈ پر تشدد کی خبریں شائع ہوئی تھیں، تاہم برطانوی اخبار کے مضمون میں تفصیلات کے ساتھ بتایا گیا تھا کہ اداکار نے بیوی کو 2 سال میں 14 مختلف مواقع پر جسمانی و جنسی تشدد کا نشانہ بنایا اخبار نے اپنے مضمون میں جونی ڈیپ کو ’بیوی پر تشدد کرنے والا شوہر‘ لکھا تھا-

مذکورہ مضمون کے بعد جونی ڈیپ نے اخبار کے خلاف جھوٹے دعوے کرنے پر مقدمہ دائر کیا تھا اور اس کی سماعتیں رواں برس جولائی سے ستمبر تک ہوئی تھیں جس میں جونی ڈیپ اور امبر ہرڈ دونوں شامل ہوئی تھیں۔

سماعتوں میں جونی ڈیپ نے سابق بیوی پر تشدد کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ اخباری مضمون میں جھوٹ لکھا گیاسچ تو یہ ہے کہ سابق اہلیہ ان پر تشدد کرتی تھیں۔

سماعتوں کے دوران امبر ہرڈ نے بتایا تھا کہ انہوں نے بھی ایک یا دو مرتبہ جونی ڈیپ پر تشدد کیا تھا مگر ان پر 14 مواقع پر تشدد کیا گیا اور ساتھ ہی سابق شوہر نے انہیں دوسرے مرد حضرات سے گینگ ریپ کا نشانہ بنوانے کی دھمکیاں بھی دی تھیں۔

سماعتوں کے بعد رواں ماہ 2 نومبر کو لندن ہائی کورٹ نے جونی ڈیپ کے خلاف فیصلہ دیتے ہوئے کہا تھا برطانوی اخبار کے حق میں فیصلہ دیا تھا جس کے بعد جونی ڈیپ کو آنے والی فلم فانٹیسٹک بیٹس‘ کی ٹیم نے فلم سے الگ ہونے کی درخواست کی تھی فلم کی ٹیم کی جانب سے کی گئی درخواست کو اداکار نے قبول کرتے ہوئے فلم سے علیحدگی اختیار کرلی۔

برطانوی اخبار سے مقدمہ ہارنے کے بعد جونی ڈیپ نئی آنے والی فلم سے باہر

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.