جماعت الدعوہ اور افغان طالبان کشمیر نہیں آئے ، بھارت الزام لگانا بند کردے

سری نگر : مقبوضہ کشمیر کی حریت پسند تنظیموں اور کشمیر ی رہنماوں نے کہا ہے کہ بھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیر کو ہتھیانے کے بعد پیدا ہونے والے احتجاج اور آزادی کی تحریک میں حدت کا الزام جماعت الدعوۃ پاکستان اور افغان طالبان پر نہ لگائے ، کوئی کشمیریوں کو نہیں اکسا رہا ہے یہ کشمیریوں کی پر بھارتی مظالم کا نتیجہ ہے ،

باغی ٹی وی کے مطابق یہ رد عمل اس وقت سامنے آیا جب بھارت کی طرف سے یہ پراپیگنڈہ پھیلایا جارہا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں جماعت الدعوۃ والے گھس گئے ہیں اور وہ کشمیریوں کی تحریک آزادی کی حمایت کررہے ہیں اس لیے حالات قابو میں نہیں آرہے ، بھارت کی طرف سے یہ بھی پراپیگنڈہ کیا جا رہا ہے کہ افغان طالبان نے بھی کشمیریوں کی مدد کی ہے .

بھارت کی طرف سے اس پراپیگنڈہ کا جواب دیتے ہوئے کشمیری رہنماوں کا کہنا تھا کہ ابھی تو جماعت الدعوۃ والے کشمیر میں نہیں آئے اور بھارت پر خوف کے سائے منڈلانے لگے ہیں اور اگر وہ آگئے تو پھر بھارت کیا بنے گا . کشمیری اپنی آزادی کی جنگ لڑ رہے اس کے لیے کسی دوسرے کوالزام دینا درست نہیں ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.