ورلڈ ہیڈر ایڈ

ججز کے خلاف ریفرنس، حکومت کو بڑی کامیابی مل گئی، وکلاء کا احتجاج نہ کرنے کا فیصلہ

ججز کے خلاف حکومتی ریفرنس کے حوالہ سے سپریم کورٹ بار کونسل نے احتجاج کا اعلان کیا، اپوزیشن جماعتیں بھی احتجاج کرتی نظر آئیں لیکن اب حکومت کو بڑی کامیابی ملی ہے. پنجاب بار کونسل وکلاء ایکشن کمیٹی نے اعلان کیا ہے کہ اس حوالہ سے کسی بھی احتجاج کا حصہ نہیں بنیں گے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وکلاء ایکشن کمیٹی کے زیر اہتمام وکلا تنظیموں کا نمائندہ اجلاس اسلام آباد میں ہوا، پنجاب بارکونسل وکلاء ایکشن کمیٹی کے رہنمائوں نے کہا کہ ریفرنس کی سماعت سےپہلے ہی احتجاج کی کالیں سمجھ سےبالاترہیں،جسٹس قاضی کیخلاف ریفرنس میں الزامات سےسب آگاہ ہیں،جج پرالزامات درست نہیں ہونگےتوریفرنس خودختم ہوجائیگا، انہوں نے مزید کہا کہ آرٹیکل 209کےتحت سپریم جوڈیشل کونسل میں کسی بھی جج کااحتساب ہوسکتا ہے،آئین ججزکےاحتساب کافورم مہیاکرتاہے ،وکلاء رہنمائوں نے مزید کہا کہ ہمیں شخصیت کونہیں بلکہ اداروں کودیکھناہے، ہمارامقصد بےلاگ احتساب ہے. پنجاب بار کونسل کے سابق ممبر رائے بشیر احمد کھرل نے کہا کہ وکلاء کا احتساب ہوتا ہے، سزائیں بھی ہوتی ہیں،22 کروڑ عوام کو سپریم کورٹ سے انصاف ملتا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ ہمارےملک میں جرنیلوں کااحتساب ہوااوران کوسزاملی، قانون سے بالاتر کوئی نہیں ہے.

 

 

حکومت نے سپریم کورٹ‌ کے سینئر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر کر دیا

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ بھی میدان میں‌ آگئے، ریفرنس کی خبروں‌ پر صدرمملکت کوخط لکھ کر اہم مطالبہ کر دیا

سینئر ججوں کے خلاف ریفرنس، ایڈیشنل اٹارنی جنرل زاہد ایف ابراہیم نے استعفیٰ دے دیا

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کے خلاف ریفرنس،سماعت کب ہو گی؟ بڑی خبر آ گئی

ججز کے خلاف ریفرنس،میڈیا کوکب تفصیلات بتائیںگے؟ فردوس عاشق اعوان بول پڑیں

ججز کے خلاف ریفرنس، حکومت کر بڑا دھچکا، اتحادی الگ ہو گئے

ججز کے خلاف ریفرنس ،اراکین سینیٹ نے ایسا کام کر دیا کہ حکومت پریشان ہو جائے

 

 

حکومت کی جانب سے ججز کے خلاف دائر ریفرنس کی سماعت 14 جون کو ہو گی،سپریم کورٹ بار ایسو سی ایشن آف پاکستان نے 14جون کے دن کو جسٹس قاضی فائز عیسیٰ سے اظہار یکجہتی کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن آف پاکستان کی ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ہوا جس کی صدارت امان اللہ کنرانی نے کی ۔اس دوران فیصلہ کیا گیا کہ 14جون کو جسٹس قاضی فائز عیسیٰ سے یکجہتی کے طور پر منا یا جائے گا ۔ممبر پنجاب بار کونسل قوسین فیصل مفتی نے وکلاء سے اپیل کی ہے کہ وہ آزاد عدلیہ کی جدوجہد میں بھر پور ساتھ دیں ،وکلاء اتحاد زندہ باد حکومت کی جانب سے ججز کے خلاف ریفرنس کی مذمت کرتا ہے. یہ عدلیہ کی‌آزادی پر حملہ ہے.14 جون کو وکلاء برادری ملک بھر میں ججز کے ساتھ یکجہتی کرے گی .

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.