fbpx

لانگ مارچ میں خاتون صحافی کی موت:جمائمہ کے گھر کے باہر لندن میں رہنے والے پاکستانیوں کا احتجاج

لندن: خاتون صحافی صدف نعیم کی پی ٹی آئی لانگ مارچ کے دوران کنٹینر کے نیچے آکر جاں بحق ہونے پر پاکستانی شہریوں نے عمران خان کی سابقہ اہلیہ جمائما گولڈ اسمتھ کے گھر کے باہر احتجاج کیا-

باغی ٹی وی: پاکستانی شہریوں نے جمائما کے باہر احتجاج کے دوران کہا کہ پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر لاہور میں عمران خان کے لانگ مارچ کے دوران ایک خاتون صحافی شہید ہو گئیں ہیں اور پتہ نہیں کتنی لاشیں گریں گی-

لانگ مارچ میں خاتون صحافی کی موت، وزیر داخلہ نے بڑا اعلان کر دیا

پاکستانی شہریوں کا کہنا ہے کہ جمائما کے گھر میں تین بچے ہیں آپ ان تین بچوں کو پہلے لے جاؤ لانگ مارچ اور دھرنوں میں ان کو شامل کرو پھر آپ قوم کے بچوں کو کہو کہ باہر نکلو آپ کو شرم آنی چاہیے آپ کا لائف سٹائل آپ کا رہن سہن اس قابل نہیں ہے کہ آپ غریبوں کے ساتھ آور پاکستانی عوام کے ساتھ کھڑے ہوں-

مطاہرین نے عمران خان پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آپ کہتے ہیں کہ میں نوجوانوں کے لئے پاکستان بنا رہا ہوں پہلے ان نوجوانوں یعنی اپنے بیٹوں کو تو ان نوجوانوں میں کھڑا کرو-

واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ کے کامونکی جاتے ہوئے راستے میں عمران خان کے کنٹینر کے نیچے آکرنجی ٹی وی کی خاتون رپورٹر جاں بحق ہوگئیں حادثے کے فوری بعد سابق وزیراعظم عمران خان نے آج کا مارچ منسوخ کردیا۔

انہوں نے خطاب میں کہا کہ بدقسمتی سے ایک حادثہ ہوا ہے، آج ہم نے کامونکی جانا تھا لیکن حادثے کی وجہ سے کینسل کردیا ہے آج ہم اپنے مارچ کو ختم کر رہے ہیں اور کل کامونکی سے اپنا مارچ شروع کریں گے، ایک حادثے کی وجہ سے ہمیں آج کا مارچ منسوخ کرنا پڑا، خاتون رپورٹر کی فیملی سے اظہار ہمدردی کرتے ہیں۔

صدف کنٹینر پر تعینات گارڈز کے دھکا دینے سے جاں بحق ہوئیں، ساتھی رپورٹر کا دعویٰ