fbpx

کابل ائیرپورٹ پر راکٹ حملوں کو دفاعی نظام کے زریعے روک لیا ،امریکی عہدیدار

افغان دارالحکومت کابل پر متعدد راکٹ فائر ہونے کی آوازیں سنی گئیں

خبر ایجنسی کے مطابق فوری طور پر پتہ نہیں چل سکا راکٹ کہاں گرے یا ان کا ہدف کہاں تھا،عینی شاہدین کے مطابق راکٹ کابل ایئرپورٹ پر خیرخانہ کے علاقے میں ایک کار سے داغے گئے،افغان میڈیا کے مطابق راکٹ حملے سے ہلاکتوں کے بارے میں ابھی کوئی تفصیل نہیں دی گئی،

امریکی عہدیدار کا کہنا ہے کہ کابل ایئرپورٹ پر متعدد راکٹ داغے گئے،کابل ائیرپورٹ پر راکٹ حملوں کو دفاعی نظام کے زریعے روک لیا گیا عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ 5 راکٹ فائر کیے گئے، یہ واضح نہیں ہے کہ تمام راکٹس کو دفاعی نظام نے گرایا ہے یا نہیں، ابتدائی رپورٹوں میں کسی امریکی ہلاکت کی نشاندہی نہیں کی گئی ہلاکتوں کے بارے میں معلومات تبدیل ہو سکتی ہیں،

وائیٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن کو کابل ائیرپورٹ پر راکٹ حملے سے آگاہ کردیا راکٹ حملوں کے باوجود انخلا کے مشن میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ،یہ راکٹ ایسے وقت میں داغےگئے ہیں امریکی فوجیوں کا انخلا مکمل ہونے میں 48 گھنٹے سے بھی کم وقت رہ گیا ہے

قبل ازیں کابل ائیر پورٹ کے قریب امریکی فضائیہ کی جانب سے ایک گاڑی کو ڈرون حملوں سے نشانہ بنایا گیا جس میں متعدد بچوں سمیت نو افراد ہلاک ہو گئے ہیں امریکی حکام کا کہنا ہے کہ بغیرپائلٹ طیارے سے کابل ائیرپورٹ کی طرف جانے والی ایک گاڑی کو نشانہ بنایا گیا ہے۔اس میں داعش کے متعدد خودکش حملہ آور سوار تھے لیکن انھوں نے یہ نہیں بتایا ہے کہ اس حملے میں کتنے داعشی مارے گئے ہیں دوسری جانب سینیٹ کام کا کہنا ہے کہ کابل میں ڈرون حملے میں شہریوں کی ہلاکت کی تحقیقات کررہے ہیں،ڈرون حملے میں 6 بچوں سمیت9افراد ہلاک ہوئے تھے، امریکی سینٹرل کمانڈ کا کہنا ہے کہ اسے کابل میں داعش مخالف حملے کے بعد شہری ہلاکتوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں اور وہ تحقیقات کر رہے ہیں

واضح رہے کہ کابل پر طالبان کا مکمل کنٹرول ہے، طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے پریس کانفرنس میں عالمی دنیا اور افغان قوم کو اہم پیغام دیے، کابل میں حالات زندگی معمول پر ہیں، تعلیمی ادارے، بازار کھلے ہیں، خواتین بھی دفاتر میں کام کر رہی ہیں، طالبان میں اس بار بدلاؤ آیا ہے اور خواتین کو بھی کام کرنے کی اجازت دی گئی ہے، طالبان کی جانب سے کسی قسم کی کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا رہی،کابل سے نمائندہ باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق طالبان نے شہریوں سے گزشتہ روز اسلحہ جمع کیا اور کہا کہ اب حفاظت ہماری ذمہ داری ہے، طالبان نے ریڈیو ،ٹی وی کے دفاتر سمیت مختلف مقامات کا بھی دورہ کیا اور ملازمین سے بات چیت کی،

افغان طالبان کی جانب سے شہریوں کو مسلسل پیغامات دیئے جا رہے ہیں کہ وہ اپنے کام معمول کے مطابق جاری رکھیں، دوسری جانب افغان شہریوں کی جانب سے بھی طالبان کا خیر مقدم کیا جا رہا ہے، افغان شہری طالبان کے ہوتے ہوئے اپنے آپ کو محفوظ تصور کر رہے ہیں

طالبان کی حمایت میں بولنے پر بھارت میں دو مقدمے درج

حامد کرزئی،عبداللہ عبداللہ سے طالبان رہنماؤں کی ملاقات، بڑی یقین دہانی کروا دی

طالبان رہنما متحرک، حامد کرزئی کے بعد گلبدین حکمت یار سے ملاقات

امریکا اور اس کے حواریوں کی طرح بھارت بھی کشمیر سے بھاگے گا، سید علی گیلانی

افغان طالبان کا خواتین سمیت سب شہریوں کو اپنی ملازمتوں پر جانے کی ہدایت

ترکی طالبان کے ساتھ تعاون کے لیے تیار

امریکی سیکریٹری خارجہ کا سعودی وزیر خارجہ سے رابطہ

انتظار کی گھڑیاں ختم، طالبان کا اسلامی حکومت تشکیل دینے کا اعلان

طالبان اب واقعی بدل گئے، کابل کے شہریوں کی رائے

افغانستان میں کیسی حکومت ہونی چاہئے؟ شاہ محمود قریشی کی تجویز سامنے آ گئی

کابل ایئر پورٹ پر ہنگامی صورتحال، طالبان کے کنٹرول کے بعد پہلا نماز جمعہ

افغانستان سے غیر ملکی صحافیوں کا انخلا ،وزیراعظم کی زیر صدارت خصوصی اجلاس

افغان طالبان نے حکومت سازی کے حوالہ سے اہم اعلان کر دیا

مودی افغان طالبان کے سامنے "جھکنے” کو تیار

اس بات کا کوئی ثبوت نہیں کہ اسامہ بن لادن نائن الیون کے حملوں میں ملوث تھا ،ذبیح اللہ مجاہد

سابق صدر حامد کرزئی، عبد اللہ عبداللہ کو طالبان نے نظر بند کردیا

جنہوں نے حملہ کیا وہ اس کی قیمت چکائیں گے، جوبائیڈن کا کابل دھماکوں پر ردعمل

امریکی فضائیہ کے طیاروں کی پاکستانی فضائی حدود میں پرواز

کابل ایئر پورٹ، مزید دھماکوں کا خدشہ برقرار،دو ممالک کا انخلا ختم کرنیکا اعلان

ملا عبدالغنی برادر نے کابل کی فتح پر مبارکبادی پیغام جاری کر تے ہو ئے کہا ہے کہ ‏افغانستان کی پوری مسلم ملت باالخصوص کابل کے شہریوں کو فتح پر مبارکباد پیش کرتے ہیں اللہ کی مدد و نصرت سے یہ کامیابی حاصل ہوئی ہے اللہ کا ہر وقت عاجزی کے ساتھ شکر ادا کرتے ہیں۔ کسی غرور اور تکبر میں مبتلا نہیں ہیں ملا عبدالغنی برادر نے کابل کی فتح پر مبارکبادی پیغام جاری کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ‏طالبان کا اصل امتحان اور آزمائش اب شروع ہوئی ہے کہ وہ کیسے افغان عوام کی خدمت کرتے ہیں اور دنیا کے لیے ایک ایسی مثال بنتے ہیں، جس کی باقی دنیا پیروی کرے

امریکا کا افغانستان کے شہرجلال آباد پر فضائی حملہ