کچے کے ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن کامطالبہ،وزیر داخلہ محسن نقوی کیلیے چیلنج

0
142
dako

کچہ کے علاقے میں پنجاب پولیس کا جرائم پیشہ ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن جاری ہے

ترجمان پنجاب پولیس کے مطابق پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان شدید فائرنگ کے تبادلے میں ایک ڈاکو ہلاک جبکہ دو شدید زخمی ہو گئے ہیں، ڈاکوؤں کی فائرنگ سے ایلیٹ فورس کا ایک جوان معمولی زخمی جسے طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جس کی خالت خطرے سے باہر ہے۔

لڑکیوں سے فون پر دوستی، سستی اشیاء کی فروخت، ڈاکوؤں کا اغوا کا طریقہ
پنجاب اور سندھ میں کچے کے ڈاکو ؤں نے عوام کا جینا محال کر رکھا ہے، شہریوں کو اغواکرنا، ان پر تشدد کرنا اور پھر تاوان طلب کرنا، تشدد کی ویڈیو وائرل کرنا ڈاکوؤں کا پسندیدہ مشغلہ بن چکا ہے ، میڈیا رپورٹس کے مطابق کچے کے ڈاکو اتنے طاقتور ہیں کہ پولیس اعلانات تو کرتی ہے لیکن انکے خلاف کاروائی نہیں کر پاتی، اب وزیر داخلہ محسن نقوی کے لئے یہ چیلنج ہو گا کہ وہ کچے کے ڈاکوؤں کے ساتھ کیسے نمٹتے ہیں،کچے کے علاقے میں ڈاکوئوں کا مضبوط نیٹ ورک قائم ہے، جس کا نوٹس عدالت بھی لے چکی ہے، ماضی کے مقابلے میں ڈاکو اب کارروائیوں کے لیے سوشل میڈیا کا استعمال بھی کر رہے ہیں۔کچے ڈاکوؤں نے سوشل میڈیا کو بھی ہتھیار بنالیا ہے، شہریوں کو لڑکیوں سے دوستی اور مختلف اشیاء سستی قیمت پر فراہم کرنے کا لالچ دیکر کر یرغمال بنانے لگے ہیں، پچھلے کچھ عرصے سے ڈاکوئوں نے اغوا برائے تاوان کی وارداتوں پر فوکس رکھا ہوا ہے کیونکہ یہ پیسے کے حصول کا سب سے آسان طریقہ ہے۔ مغویوں کے اہل خانہ سے ان کے پیاروں کی رہائی کے عوض بھاری تاوان مانگا جاتا ہے۔ تاوان کی رقم کی وصولی کو یقینی بنانے کے لئے مغویوں پر تشدد کی ویڈیوز اہل خانہ کو بھیجی جاتی ہیں،

سندھ میں کندھ کوٹ اور کشمور کے کچے کے ڈاکو ایک سال میں 400 افراد کو اغوا کرچکے ہیں، گزشتہ چند روز کے دوران کچے کے ڈاکوؤں کے ہاتھوں 2 یرغمالی مارے جاچکے ہیں،سندھ حکومت اور پولیس کے بلند و بانگ دعوؤں کے اور 250 آپریشنز کے باوجود کچے میں مختلف ڈاکو گروہ آزادانہ وارداتیں کرنے میں مصروف ہیں،پولیس حکام کے مطابق کندھ کوٹ اور کشمور کے کچے کے علاقے میں تیغانی، جاگیرانی، شر، بھیو، بھنگوار گینگ اب بھی موجود ہیں،ڈاکوؤں کے حملے میں 11 پولیس اہلکار شہید اور اتنے ہی زخمی ہوچکے ہیں جبکہ پولیس کارروائی میں 23 ڈاکو ہلاک اور 160 گرفتار کیے گئے ہیں،آزاد ذرائع کے مطابق ہر ماہ 20 سے 30 افراد تاوان کے عوض آزاد ہوتے ہیں

ڈاکو سرعام سوشل میڈیا استعمال کرتے اور دھمکیاں دیتے ہیں،سراج الحق کا آپریشن کا مطالبہ
امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کچے میں ڈاکوؤں کیخلاف فوری آپریشن کا مطالبہ کیا ہے،سراج الحق کا کہنا تھا کہ نگران حکومت کے دور میں اربوں روپے خرچ کرکے کچہ آپریشن کا ڈرامہ رچایا گیا، صوبائی حکومتیں کچے کے ڈاکوؤں کیخلاف ناکام ہو چکی ہیں، جماعت اسلامی کے دو کارکن لنڈ گینگ کے ہاتھوں قتل ہوگئے، رحیم یار خان اور صادق آباد میں ڈاکو راج کے خاتمے کے لیے وزیر اعظم، آرمی چیف اور پولیس اپنا کردار ادا کرے ڈاکو سرعام سوشل میڈیا استعمال کرتے اور دھمکیاں دیتے ہیں۔ پولیٹیکل ونگز بنا کر پورے علاقے کو یرغمال بنا رکھا ہے، میں حکومت کو خبردار کرتا ہوں کہ وہ اپنے آپ کو ذمہ دار سمجھتی ہے تو فوری طور پر ان ڈاکووں اور کچے کے جنگلات میں چھپے وحشی درندروں کا صفایا کرے ایسا نہ کیا گیاتو عوام کے ہاتھ ہوں گے اور تمہارے گریبان،

کچے کے ڈاکو، تحریک انصاف سندھ کا ردعمل
تحریک انصاف سندھ کے صدر و سابق اپوزیشن لیڈر سندھ حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ کیا کچے کے ڈاکو آزاد ہوچکے ہیں جنہیں شہریوں کو اغوا کرنے کی بھی اجازت دے دی گئی ہے۔اس وقت انتہائی افسوس ناک صورتحال ہے عوام کا جان و مال محفوظ نہیں ہے کچے کے علاقے میں ہمارے ایک ٹیچر کو قتل کر دیا گیا استاد کا قتل نہیں وہ تعلیم کا قتل تھا استاد کہہ رہا تھا کہ جان کو خطرہ ہے لیکن کسی بھی ادارے کی جانب سے تحفظ نہیں دیا گیا کچے میں ڈاکوئوں نے 12 ڈرائیورز کے ساتھ متعدد مغویوں کو قتل کر دیا ہے دو مغویوں کی ٹانگوں میں گولیاں ماری گئیں تشدد کی وڈیوز بھی آرہی ہیں ڈاکو جشن منا رہے ہیں لیکن اس کے باوجود کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

تھانہ روجھان کی حدود سے کچے کے ڈاکوؤں کے سہولت کار کو گرفتار کرلیا گیا

گھوٹکی: کچے کے علاقے میں پولیس کا ڈاکوؤں کے ساتھ مبینہ مقابلہ،3 مغوی بازیاب کرانے کادعویٰ

تنگوانی:کچے کے ڈاکوؤں نے 2 شہریوں کو اغواء کرلیا

تنگوانی : کچے کے ڈاکوؤں نےمل چوکیدارسمیت 10 افراد اغوا کرلئے

گھوٹکی:کچے میں ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن،خطرناک ڈکیت نے ہتھیارڈال دئے

ڈاکوؤں کے کئی ٹھکانے گرانے کے بعد جلا دیے گئے

کچے کے علاقے میں ڈاکوؤں کے خلاف آپریشن کے دوران آئی جی پنجاب اور ڈی پی او پر فائرنگ

ڈھولچی ڈانسر گروپ کچے کے ڈاکوؤں کے چنگل سے بازیاب

جلد اسٹریٹ کرمنلز اور کچے کے ڈاکوؤں کو گرفتار کرلیں گے،وزیراعلیٰ سندھ
وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ شہیدوں کی قربانی کی وجہ سے پاکستان پیپلز پارٹی نے سب سے زیادہ ووٹ حاصل کئے ہیں، سندھ کی عوام نے جو پیپلز پارٹی اور مجھے عزت دی ہے میری کوشش ہوگی ان کی امیدوں کی تکمیل کروں، ہمارے خلاف وہ تیظیمیں احتجاج کر رہی ہیں جن کو پولنگ ایجنٹ بھی نہیں مل رہے تھے، آج میں نے امن امان سے متعلق اہم اجلاس کیا ہے، ہم جلد اسٹریٹ کرمنلز اور کچے کے ڈاکوؤں کو گرفتار کرلیں گے، ہم نے پہلے بھی کام کر کے دکھایا ہے اور اب بھی عوام کی خدمت کرینگے، سیلاب متاثرین کے علاوہ تمام بےگھر لوگوں کیلئے گھروں کا بندوبست کرینگے، ہم نے ہمیشہ عوام کی خدمت کی ہے اور کام کر کے دکھایا ہے اور دوسروں نے صرف اعلانات کئے ہیں.

Leave a reply