fbpx

کراچی چیمبر کی مداخلت پر 6 روز سے بند بازار فیصل ڈی سیل،تاجروں کا دھرناواحتجاج

چیمبر کی مداخلت پر 6 روز سے بند بازار فیصل ڈی سیل تاجروں کا دھرناواحتجاج
موتی والا اور مجید میمن کے مشکور ہیں ظلم و زیادتیوں کیخلاف 3 جون کو دھرنا ہوگامحمود حامد
کراچی ال پاکستان آرگنائزیشن آف اسمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز کراچی کے صدر محمود حامد نے چھہ روز سے بند بازار فیصل اور عدیل سنٹر کریم آباد کو ڈی سیل کروانے پر بی ایم جی گروپ کے چیئرمین زبیر موتی والا کراچی چیمبر کے صدر شارق وھرہ اسمال ٹریڈرزکمیٹی کے چیئرمین مجید میمن اور تنویر باری کا شکریہ ادا کیا ہے واضح رہے کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کی بنیاد پر بازار فیصل کریم آباد اور عدیل سینٹر کو اے سی ڈسٹرکٹ سنٹرل نے چھ روز قبل سیل کر دیا تھا اور تاجروں کی کوششوں کے باوجود اسے ڈی سی نہیں کیا گیا اور تاجروں سے بھاری رقمیں طلب کی جا رہی تھی نیز انہیں مجبور کیا جا رہا تھا کہ وہ ای پورٹل ٹیکس کی فوری ادائیگی کریں آج متاثرہ تاجروں نے کراچی چیمبر آف کامرس سے رابطہ کیا تو چیمبر کی قیادت نے ڈی سی سینٹرل سے رابطہ کیا اور ڈسٹرکٹ سینٹرل کے تاجروں کے ساتھ ہونے والی زیادتی پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا اس دوران بازار فیصل اور عدیل سنٹر کے مشتعل تاجر سڑکوں پر آگئے اور انہوں نے کریم آباد پر شاہراہِ پاکستان کو بلاک کردیا جس کی اطلاع پر اسمال ٹریڈرز کراچی کے صدر محمود حامد، محمد اختر، کاشف احمد، محمد اکبر اور دیگر تاجر راہنماؤں نے جا کر امن و امان کی صورتحال کو کنٹرول کیا اور تاجروں کو چھہ روز سے بند مارکیٹ کو کھلوانے کی یقین دھانی کرائی کراچی چیمبر کی کوششوں کے نتیجے میں شام پانچ بجے ڈی سی سینٹرل نے باذار فیصل اور عدیل سینٹر کو ڈی سیل کرنے کے احکامات جاری کر دیئے اس موقع پر اسمال ٹریڈرز کے صدر محمود حامد نے متاثرہ تاجروں سے خطاب کرتے ہوئے کراچی چیمبر آف کامرس کا شکریہ ادا کیا انہوں نے کہا کہ چیمبر نے تاجروں کی نمائندگی کا حق اداکر دیا انہوں نے کراچی میں میں تاجروں کے ساتھ ظالمانہ رویے کی بھرپور مذمت کی اور سوال کیا کہ ملک کے خزانے میں 70 فیصد ریونیو دینے والے شہر کے تاجروں کے ساتھ یہ ظلم کیوں روا رکھا جارہا ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ پولیس کی رشوت ستانی جرمانے بند کیے جائیں ھفتہ میں دو دن کی تعطیل کا خاتمہ کیا جائے اور کاروباری اوقات رات 10 بجے تک بڑھائے جائیں محمود حامد نے کہا کہ جب پورے ملک میں کاروباری اوقات بڑھا دیئے گئے ہیں اور کرونا وبا کے کیسز میں واضح کمی آئی ہے تو پھر کراچی کی تجارت اور معیشت کو کیوں تباہ کیا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ کراچی کے تاجر اس ظلم و زیادتی کے خلاف اور اپنے روزگار کو بچانے کے لئے 3 جون کو تین بجے ایم اے جناح روڈ پر احتجاجی دھرنا دینگے اسمال ٹریڈرز کے صدر نے تاجر برادری سے اپیل کی کہ وہ اس دھرنے میں بھرپور شرکت کریں۔