fbpx

کراچی کی ایک اور دوشیزہ انصاف کی حصولی کی غرض سے بے حس تھانیدار کی بھید چڑھ گئ۔

کراچی کی ایک اور دوشیزہ انصاف کی حصولی کی غرض سے بے حس تھانیدار غلام رسول سیال کی غیر اخلاقی گفتگو و حرکات کی بھید چڑھ گئی۔

فرد کے سدھار کی ذمیدار پولیس خود بری طرح سے بگڑ کر سامنے آ گئی ۔ایس ایچ او موبینہ ٹاؤن نے انصاف کی حصولی کے لئے آنے والی خاتون سے ایک لاکھ روپے کی ڈیمانڈ کر ڈالی ۔غریب پوش خاتون نے دینے سے انکار کردیا جس پر ماضی کے بدنام تھانیدار نے مغلظات و نازیبا حرکات کا مظاہرہ کرتے ہوئے غیر اخلاقی طریقے سے خاتون کو باہر نکال دیا ۔خاتون کے مطابق گزشتہ 15 روز سے انصاف کی حصولی کے لئے تھانہ موبینہ ٹاؤن کے چکر لگانے پر مجبور ہوں ایس ایچ او موبینہ ٹاؤن مجھ سے نازیبا حرکات اپناتے رہے ۔
متاثرا خاتون کے مطابق عزت کے ڈر اور انصاف کی حصولی کے لئے ایس ایچ او کی حرکات گھر والوں سے چھپاتی رہی ۔گزشتہ ماہ کے دوران ہماری مدعیت میں کاٹی گئی ایف آئی آر میں نامزد ملزم فرخ احمد سے پیسے لے کر ایس ایچ او غلام رسول سیال نے میرے والد کے خلاف ایف آئی آر کاٹ دی ہے۔
متاثرا خاتون کے مطابق ایس ایچ او موبینہ کے غیر اخلاقی حرکات کی اطلاع دینے کے لئے ڈی ایس پی موبینہ مرتضیٰ راؤ کے پاس گئی ڈی ایس پی صاحب نے بھی ایس ایچ او سے دشمنی مول لینے کے خطرات سمیت موصوف کی پوری حمایت کر دی ۔در در انصاف کی حصولی اور ایس ایچ موبینہ کے تضحیک آمیز عمل کے اطلاع دینے کیلئے کراچی پولیس چیف کے دفتر بھی گئی عملے نے 3 گھنٹے انتظار کروانے کے بعد بھی ہمیں ایڈیشنل آئی جی صاحب کے پاس پیش نہیں کیا۔
ہماری جان کو خطرہ ہے ہمیں تحفظ فراہم کیا جاۓ ہمارے ساتھ کچھ بھی ہوا اس کا زمیدار فرخ احمد ولد لئیق احمد اس کے سارے بھائی اور ایس ایچ او موبینہ ٹاؤن غلام رسول سیال ہیں۔
متاثرہ خاتون کی آئی جی سندھ ایڈیشنل آئی جی کراچی اور ڈی آئی جی شرقی سے انصاف دلوانے اور مذکورہ ایس ایچ او کے خلاف کارروائی کی دردمندانہ اپیل کی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.