fbpx

کراچی میں کورونا جلسے،جلوسوں، الیکشنوں کے دوران چھٹی پر ہوتا ہے،صرف شادی ہالز اور اسکولوں میں پایا جاتا ہے

پاکستان عوامی تحریک کے قائدین ماہرین تعلیم محمد الیاس مغل،راؤ محمد طیب،راؤ اشتیاق احمد نے وزراء تعلیم کی کانفرنس کے مضحکہ خیز علامیئے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب نا اہل لوگوں کو تعلیم کے وزیر بنایا جائے گا تو اسی طرح کے فیصلے آئیں گے۔وفاقی اورصوبائی وزرا تعلیم کا آئے روز امتحانوں کی تاریخوں میں تبدیلی سے جگ ہنسائی ہو رہی ہے۔

وزراتعلیم خود کنفیوز ہیں انہیں سمجھ نہیں آرہی وہ کیا کریں تعلیم کو مذاق بنا رکھا ہے۔ملک میں کاروبار کھلے ہیں۔مارکیٹوں میں پبلک رش ہے صرف تعلیمی اداروں میں حکمرانوں کو کورونا نظر آتا ہے۔ان قائدین نے کہا جان بوجھ کر تعلیمی اداروں اور شادی ہالز کو بند کیا گیا ہے جسکی وجہ سے پرائیوٹ اسکولز اور شادی ہالز سے وابستہ لوگوں کے گھروں میں فاقے ہو رہے ہیں۔ان قائدین نےکہا کورونا جلسے،جلوسوں، الیکشنوں کے دوران چھٹی پر ہوتا ہے اور وہ صرف شادی ہالز اور اسکولوں میں پایا جاتا ہےحکمرانوں کی ناکام پالیسیاں عوام اور تعلیم دشمن ہیں۔ صوبائی اور وفاقی حکومتوں کی نا اہلی کا اندازہ اس بات سے لگایا جائے کورونا کو دوسال ہونے کو ہیں مگر انہوں نے کوئی منصوبہ بندی نہیں کی سوائے اجلاسوں کے اور قوم کے بچوں کو کنفیوز کرنے کے کوئی کام نہیں ہوا جو کہ لمحہ فکریہ ہے۔ان قائدین نےکہا حکمران بچوں کے مستقبل سے نہ کھیلیں بلکہ فی الفور تعلیمی ادارے کھولے جائیں۔