fbpx

کراچی میں لاک ڈاؤن کا پہلا روز ، پولیس کی جگہ جگہ ناکہ بندی، مارکیٹس اوردکانیں بند

کراچی میں پولیس نے لاک ڈاؤن پر عملدرآمد کرانے کیلیےجگہ جگہ ناکہ بندی کردی، غیرضروری طورپرگھروں سےنکلنےوالوں کوبھی واپس کیاجارہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں لاک ڈاؤن کے پہلے روز پولیس نے جگہ جگہ ناکہ بندی کردی ، پبلک ٹرانسپورٹ کو ناکوں سے آگے جانے نہیں دیاجارہا اور پولیس اہلکاربسوں سے مسافروں کواتارنےمیں مصروف ہیں۔

غیرضروری طورپرگھروں سےنکلنےوالوں کوبھی واپس کیاجارہاہے اور بغیرماسک کسی کوبھی سڑک پر آنےکی اجازت نہیں ، سڑکوں پرٹریفک معمول سے کم، مارکیٹس اوردکانیں بھی بند ہیں۔

پولیس کیجانب سے رکاوٹیں لگا کر سڑکیں بندکردی گئیں ، جس کے باعث مختلف علاقوں میں ٹریفک جام ہوگیا ہے ، تاہم منی بسوں کےاندراورچھتوں پرمسافروں کاسفر جاری ہے اور ڈبل سواری پر پابندی پربھی عمل نہیں کیا جارہا۔

دوسری جانب نیشنل ہائی وے اسٹیل ٹاؤن کے مختلف مقامات پرسخت چیکنگ جاری ہے، پولیس اوررینجرز کےجوان مختلف مقامات پر موجود ہے اور گھروں سےنکلنے والے افراد کوچیک کیاجارہا ہے۔

رات گئے لاک ڈاؤن کےحوالےسے ایس ایس پیزکا ہنگامی اجلاس ہوا تھا ، جس میں غور کیا گیا کہ لاک ڈاؤن پرعملدرآمد کیسے کرایاجائے ، اس حوالے سے ایس ایس پیزنےلاک ڈاؤن سےمتعلق ایس ایچ اوزکوہدایات دیں اور کہا پولیس اہلکارہرممکن لاک ڈاؤن کویقینی بنائیں۔

یاد رہے گذشتہ روز سندھ حکومت نے لاک ڈاؤن کا اعلان کیا تھا ، نوٹیفکیشن میں کہا گیا تھا کہ کاروباری مراکزآج رات12بجےسے8اگست تک بندرہیں گے صرف ضروری اشیا کی دکانیں شام چھے سے صبح چھ بجے تک بند رہیں گی۔

کل سےجاری امتحانات آئندہ احکامات تک ملتوی رہیں گے جبکہ سندھ بھرمیں ڈبل سواری پرپابندی عائد کردی گئی اور گھرسےباہرنکلنےوالوں کیلئےویکسی نیشن کارڈلازمی قرار دیا۔