fbpx

کراچی۔ ‏قیوم آباد پولیس اہلکار کی فائرنگ سے 6 سالہ بچی جاں بحق

کراچی۔ ‏قیوم آباد پولیس اہلکار کی فائرنگ سے 6 سالہ بچی جاں بحق

سندھ پولیس نے قیوم آباد میں شادی کی خوشی میں کی جانے والی ہوائی فائرنگ سے جاں بحق ہونے والی بچی کے قتل کے الزام میں پولیس اہلکار سمیت 7 ملزمان کو گرفتار کرلیا۔

ذرائع کے مطابق کراچی کے علاقے قیوم آباد میں شادی کی تقریب کے دوران شدید ہوائی فائرنگ کی گئی، جس سے علاقہ مکین بھی شدید خوف کا شکار ہوئے۔ والدہ کے مطابق گلی میں جاتے ہوئے افراد نے ہوائی فائرنگ کی، تیسری منزل پر موجود گھرکی کھڑکی میں3سے4گولیاں لگیں، جن میں سے ایک گولی 7 سالہ سعدیہ نامی بچی کے سر پر بھی لگی۔
اہل خانہ سعدیہ کو تشویشناک حالت میں لے کر جناح اسپتال پہنچے ، جہاں ڈاکٹرز نے اُسے بچانے کی ہر ممکن کوشش کی مگر خون زیادہ بہہ جانے اور سر میں گولی لگنے سے وہ جانبر نہ ہوسکی۔
مزید پڑھیں: شادی میں پولیس اہلکار کی فائرنگ سے بچی جاں بحق

ڈیفنس تھانے کے ایس ایچ او نے بتایا کہ فائرنگ کی اطلاع پر پولیس نے موقع پر پہنچ کر دو بھائیوں نعمان اورارسلان سمیت چھ افراد کو حراست میں لے لیا جبکہ ہوائی فائرنگ کرنے والا پولیس اہلکار ملزم معین موقع سے فرار ہوگیا تھا، جسے ڈیفنس پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کے نتیجے میں گرفتار کرلیا۔
پولیس کے مطابق فرار ملزم معین سولجر بازار تھانے میں تعینات ہے  اور وہ گرفتار ہونے والے افراد کو سگا بھائی ہے۔ پولیس کے مطابق گرفتار کزن کی شادی تھی جس میں وہ ہوائی فائرنگ کررہا تھا۔
ایس ایچ او ڈیفنس اشرف جوگی نے بتایا کہ ڈیفنس پولیس نے جاں بحق ہونے والی کمسن سعدیہ کے والد حنیف کی مدعیت میں نامزد ملزمان کے خلاف مقدمہ نمبر 890 سال 2021 درج کرکے مرکزی ملزم کی تلاش شروع کردی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ پولیس نے مذکورہ مقدمہ زیر دفعات 324/34کے تحت درج کیا تھا جو اب بچی کے انتقال کے بعد 302میں تبدیل ہوگا

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!