fbpx

کراچی سے چوری ہوئی موٹر سائیکلیں کہاں جاتی ہیں

کراچی سے چوری ہوئی موٹر سائیکلیں کہاں جاتی ہیں

کراچی سے چوری ہونے والی موٹرسائيکلیں ٹھکانے لگانے کا ايک راستہ ضلع لسبيلہ کی تحصيل ساکران کا علاقہ چيکو باغ بھی ہے جہاں ایسی موٹر سائيکلوں کے بدلے منشيات فراہم کی جاتی ہیں۔

میڈیا نے اس معاملے کی تحقیقات کیں تو موٹر سائيکل چوری کے ساتھ منشیات کے دھندے کا بھی تعلق نکل آیا۔ کراچی سے چوری ہونے والی موٹر سائیکلوں کو ٹھکانے لگانے کا آّسان مقام حب کی تحصيل ساکران ہے جو کراچی سے قریب ہونے کی وجہ سے منشيات کے کھیپیوں کا آسان اور محفوظ مرکز ہے۔

کراچی پولیس کے ہاتھوں گرفتار ایک منشیات فروش عارف سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق معلوم ہوا کہ کراچی سے چرائی گئی موٹرسائیکل چیکو باغ میں ٹھکانے لگانے اور اس کے بدلے منشیات کراچی لانے کے ليے پوليس کی خدمت میں جو قيمت ادا کرنی پڑتی ہے وہ صرف دو سو روپے ہے۔

ساکران میں رہنے والوں نے بھی میڈیا کو بتایا کہ چیکو باغ منشیات فروشی کا ايسا اڈا ہے جہاں کھیپی آتے تو چوری کی موٹر سائیکل پر ہیں مگر ان کی واپسی پیدل اور منشیات کے ساتھ ہوتی ہے۔

سابق ایس ایس پی ویسٹ ڈاکٹرمحمد رضوان بھی اپنی ر پورٹ میں بتا چکے ہيں کہ کراچی میں منشیات کچے راستوں سے لائی جاتی ہے اور اس کا تعلق بلوچستان میں جاری چوری کی موٹر سائیکلوں کے دھندے سے ہے۔