fbpx

کراچی یونیورسٹی حملہ کیس میں ملوث اہم دہشت گرد گرفتار

سی ٹی ڈی نے کراچی یونیورسٹی حملہ کیس میں ملوث اہم دہشت گرد کو گرفتار کرلیا ہے،ذرائع کے مطابق کراچی یونیورسٹی حملہ کیس میں بڑی پیش رفت سامنے آئی ہے کراچی یونیورسٹی حملے میں ملوث دہشت گرد کو ٹیکنیکل اور دیگر شواہد کی مدد سے گرفتار کیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق گرفتار دہشت گرد سے ابتدائی تفتیش مکمل کرلی گئی، ممکنہ طور پر جلد ملزم کو سامنے لایا جائے گا۔

زرائع کے مطابق دہشت گرد کا کراچی یونیورسٹی حملے کی خودکش بمبار کے شوہر سے تعلق تھا،دہشت گرد کو کشن اقبال کے علاقے سے حراست میں لیا گیا، دہشت کرد دو چینی انجنیئرز کے قتل میں بھی ملوث ہے، دہشت گرد کا تعلق قوم پرست جماعت سے ہے جو قانون نافذ کرنے والے ادارون کو مطلوب تھا. زرائع کے مطابق دہشت گرد کئی تخریب کاری کی وارداتون میں ملوث ہے،گرفتار دہشت گرد کو کراچی یونیورسٹی دھماکے سے قبل افغانستان بلوایا گیا تھا اور اسے وہاں دھماکہ خیز مواد تیار کرنے کی تعبیت بھی دی گئی تھی ،زرائع کے مطابق دہشت گرد کو افغانستان سے رقم بھی دی گئی تھی.

دو روز قبل سی ٹی ڈی نے پنجاب میں انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کارروائیوں کے دوران 9 دہشت گرد گرفتاروں کو ھراست میں لیا تھا.ترجمان سی ٹی ڈی کے مطابق دہشت گردوں کے قبضے سے بارودی مواد ، اسلحہ ، خودکش جیکٹس برآمد ہوئی ہیں۔ سی ٹٰی ڈی ترجمان کے مطابق کارروائیاں گوجرانوالہ، لاہور، سرگودھا، ملتان، راولپنڈی میں کی گئی ہیں، گرفتار دہشت گردوں کے خلاف 7 مقدمات درج کر لیے گئے ہیں۔

گرفتار دہشت گردوں میں یعقوب، عبدالصمد، بلال، عارف، امین ، فاروق اور آصف شامل ہیں اور ان میں سے 2 کا تعلق لاہور سے ہے۔ترجمان سی ٹی ڈی نے کہا ہے کہ ملزمان سے تفتیش جاری ہے، اہم انکشافات متوقع ہیں۔