fbpx

کراچی چڑیا گھرمیں دانتوں کی تکلیف میں مبتلا ہتھنیوں کی سرجری

کراچی چڑیا گھر کی 16 سالہ مدھو بالا اور 17سالہ نور جہاں نامی ہتھنیوں کا روٹ کینال ہوگا

کراچی : چڑیا گھر میں دو ہتھنیوں مدھو بالا اور نورجہاں کا آج ہونےوالا دانتوں کاعلاج ملتوی ہو گیا تاہم اب ہتھنیوں کے دانتوں کی سرجری کل ہو گی۔

باغی ٹی وی : کراچی کے چڑیا گھر کی ہتھنیاں دانتوں کی تکلیف میں مبتلا ہو گئی ہیں، جنہیں اس تکلیف سے نجات دلانے کے لیے روٹ کینال کیا جائے گا کراچی چڑیا گھر کی 16 سالہ مدھو بالا اور 17سالہ نور جہاں نامی ہتھنیوں کا روٹ کینال ہوگا دونوں ہتھنیاں دانتوں کی تکلیف میں مبتلا ہیں۔

چڑیا گھر انتظامیہ کے مطابق موسم کے باعث دو سرجنز کی کراچی آمد میں تاخیر ہوئی فور پاز ٹیم کے مطابق سرجری اب بدھ کے روز صبح 10 بجے پرفارم کی جائے گی۔

آسٹریا سے آنے والے انٹرنیشنل فور پاز نامی تنظیم کے ڈاکٹرز روٹ کینال آپریشن کریں گے مدھو بالا کا دانت گل چکا ہے، جس کا آپریشن آج کیا جانا تھاغیر ملکی ڈاکٹرزکی ٹیم نے دونوں ہتھنیوں کامعائنہ کر لیا ہےڈاکٹرز نے بتایا کہ دونوں ہتھنیوں کے دانتوں کا انفیکشن خطرناک مرحلے تک پہنچ گیا ہے اور وہ مسلسل درد میں مبتلا ہیں۔

واضح رہے کہ کراچی میں چار ہاتھی ہیں جن میں سونو اور ملکہ جو سفاری پارک میں رہتے ہیں جبکہ دو ہتھنیاں نورجہاں اور مدھو بالا چڑیا گھر میں ہیں۔

قبل ازیں گزشتہ برع نومبر میں انکشاف ہوا تھا کہ کراچی کے چڑیا گھر میں مدھوبالا اور نورجہاں ہتھنیوں کے دانت غائب ہوگئےتھے جن کے بارے میں انتظامیہ بھی لاعلم تھی فور پاوز نامی بین الاقوامی این جی او کے ماہرین سفاری پارک پہنچے جہاں انہوں نے دونوں ہاتھیوں کے رہن سہن کا جائزہ لیا بلکہ کچھ ٹیسٹ بھی کیے تھے جس پر پتہ چلا تھا کہ سونو کہلانے والا ہاتھی ہتھنی نکلی جبکہ ہتھنیوں کے ناخنوں میں فنگس بھی پایا گیا تھا اور ناخن بڑنے ہونے پر بھی نہیں کاٹے گئے تھے-

فور پاوز نامی بین الاقوامی این جی او نے کراچی چڑیا گھر کا بھی دورہ کیا تھا جس پر انکشاف ہوا تھا کہ 17 سالہ نورجہاں کے دانت ٹوٹ گئے ہیں جس سے وہ شدید تکلیف میں ہے اور اسے فوری علاج کی ضرورت ہے اس کے ساتھ ہی 16 سالہ مدھو بالا بھی عمر پوری ہونے کے باوجود اب تک بالغ نہیں ہو پارہی اور وجہ دیکھ بھال کا ٹھیک نہ ہونا جبکہ اطراف میں موجود شورو غل ہے جس سے دونوں ہاتھی ذہنی دباؤ کا شکار بھی ہیں۔

اس حوالے سے چڑیا گھر انتظامیہ کا کہنا تھا کہ ہتھنیوں کے دانت گنا اور درختوں کی شاخیں کھانے سے جھڑ گئے ہیں۔دوسری جانب سندھ ہائیکورٹ میں این جی او نے اپنی سفارشات بھی جمع کروائیں تھیں جس میں ہتھنیوں میں خون کی کمی کا بھی بتایا گیا تھا-