fbpx

کشمیر کے نوجوان ریاست کے مستقبل کے ضامن بن چکے ہیں، حمزہ رافع

کشمیرکی پہلی سیاسی پارٹی جس نے پہلے عملی کام کیے پھرانہی کاموں کواپنا منشوربنایا ہے، ایک سال قبل موومنٹ کا پہلاعوامی پروجیکٹ مساجد کے شہرکوٹلی میں غریب مریضوں کے لیے دسترخوان کا قیام تھا جو رمضان کی آمد پرموبائل سحری پروگرام میں تبدیل ہو گیا ہے.

ورثاء شھداء کی گھریلو کیفیت دیکھتے ہوئے بغیر کسی تفریق کے تحریک کشمیر سے جڑی ہرجماعت بشمول قوم پرست جماعتوں کے شھداء کے ورثاء کے لیے موومنٹ کا وفد 5٫6 گاڑیوں کے پروٹوکول کی صورت میں راشن لے کرشھداء کے گھروں کا دورہ کیا کیوں کہ موومنٹ کے بانیوں کے نزدیک پروٹوکول کے حقیقی حقداراس ارض وطن کے لیے قربانیاں پیش کرنے والے لوگ ہیں، بلدیاتی انتخابات کا نہ ہونا امیدواران اسمبلی کے لیے کرپشن کی راہ ہموار کرتا ہے علاقوں کو پسماندہ بناتا ہے لہٰذا موومنٹ کی پہلی سیاسی تحریک بلدیاتی نظام کی بحالی کے لیے جدوجہد کی تھی جو25 جولائی کے بعد بھی جاری رہے گی.

موومنٹ کے جنرل سیکرٹری امیرحمزہ رافع نے جب نوجوانوں کو نشے کی لت میں مبتلا دھویں اڑانے کوقابل فخرجانتے دیکھا توکشمیرمیں باشعوریونیورسٹی طلباء کو ساتھ ملا کرپریزنٹیشنز تیارکرتے ہوئے چوک چوراہوں میں ڈیجیٹل میڈیا کے ذریعے نوجوانوں کواس کے بارے میں آگہی دی ہے، آزاد کشمیرمیں انتخابات کے دن قریب آتے ہی انہی منظم نوجوانوں نے مشاورت کے بعد عزم کرلیا ہے کہ اسی سال پارٹی کو سیاسی تحریک کا آغازکرنا چاہیے، لہٰذا پارٹی کی رجسٹریشن کے بعد انہی عملی کاموں کومنشوربنا کرقلیل وقت میں کئی حلقوں سے امیدواروں کو میدان میں اتارا ہے.

کیا آپ اس تحریک کا حصہ بن کرآزاد خوشحال کشمیرمیں ہمارا دست و بازو نہیں بنیں گے؟