موٹر وے زیادتی کیس کے خلاف احتجاج میں شرکت پر خلیل الرحمن تنقید کی زد میں

حال ہی میں لاہور موٹروے زیادتی کیس کے خلاف ہونے والے احتجاج پرپاکستان کے نامور ہدایت کار اور ڈرامہ رائٹر خلیل الرحمٰن قمر
کو تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

باغی ٹی وی : ویسے تو خلیل الرحمٰن قمر اپنے پروجیکٹس اور خواتین سے متعلق بیانات کے باعث خبروں میں رہتے ہیں انہوں نے اپنے مقبول ڈرامے ’میرے پاس تم ہو‘ کی وجہ سے شہرت حاصل کرنے کے بعد اپنے متعدد انٹرویوز میں خواتین سے متعلق نامناسب اور متنازع بیانات دئیے تھے۔

خلیل الرحمٰن قمر نے 3 مارچ کی شب ’نیو ٹی وی‘ کے ایک پروگرام میں ’عورت مارچ‘ پر بحث کے دوران خواتین کے حقوق کی رہنما ماروی سرمد کے لیے گالی گلوچ اورانتہائی نامناسب زبان استعمال کی تھی جس پر انہیں سخت تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

جبکہ ایک انٹرویو میں مصنف کا کہنا تھا کہ اگر عوت برابری کی بات کرتی ہے تو پھر لڑکیاں اٹھا کر لے جائیں مردوں کو اور گینگ ریپ کریں ان کا پھر بات ہو برابری کی اور پتا چلے کہ کون سی برابری مانگ رہی ہیں انہوں نے کہا تھا کہ میں ہر عورت کو عورت نہیں کہتے میری نظر میں عورت کے پاس ایک خوبصورتی ہے اور وہ اس کی وفا اور حیا ہے اگر وہ نہیں تو میرے لیے وہ عورت ہی نہیں-

خلیل الرحمٰن قمر کا کہنا ہے کہ ان سے بڑا فیمنست اس ملک میں کوئی نہیں ہے لیکن وہ صرف اچھی خواتین کو سپورٹ کرتے ہیں-

تاہم حال ہی میں خلیل الرحمٰن قمر جب موٹر وے پر پیش آنے والے ریپ کے واقعے کے خلاف لاہور میں جاری احتجاج میں شرکت کے لیے پہنچے تو عوام کی جانب سے ان کے گزشتہ بیانات کی وجہ سے ان کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔

سوشل میڈیا پر زیر گردش ایک ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے جب خلیل الرحمٰن قمر میڈیا سے گفتگو کرنے لگے تو کچھ لوگوں کی جانب خواتین سے متعلق ماضی میں دئیے گئے بیانات کا حوالہ دیا گیا اور ان کے خلاف نعرے بازی بھی کی گئی۔


ویڈیو میں ایک شخص کو یہ کہتے ہوئے سنا جاسکتا ہے خلیل الرحمٰن قمر تو کہتے تھے کہ عورتوں کو گھر میں بیٹھنا چاہیے۔

جس کے بعد خلیل الرحمٰن قمر نے کہا کہ میں اس بے شرمی پر لعنت بھیجتا ہوں کہ کوئی اگر سمجھتا ہے کہ خلیل الرحمٰن قمر نے کبھی کہا ہے کہ عورتوں کو گھر میں بیٹھنا چاہیے۔

انہوں نے کہا جس نے یہ بات پھیلائی میں اس پر لعنت بھیجتا ہوں –

خلیل الرحمٰن قمر نے کہا کہ میں ہمیشہ کہتا رہا ہوں کہ میں عورت کو ایک فاختہ کی طرح اڑتے ہوئے دیکھنا چاہتا ہوں لیکن حدود کے اندر اس سے کم میں نے کبھی نہیں کہا۔

خلیل الرحمٰن قمر نے کہا کہ اللہ گواہ ہے کہ میں اس بات کے سخت خلاف تھا کہ عورت مارچ نہیں ہونا چاہیے کیونکہ خواتین کے اور ہم سب کے مسائل ایک جیسے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جب اس ملک میں قانون کی بالادستی ہوگی تو انشاءاللہ ہمیں یہ بھی سمجھ آجائے گی کہ خدانخواستہ کہیں عورت سے زیادتی نہیں ہورہی۔

خلیل الرحمٰن قمر نے مزید کہا تھا کہ اس بہیمانہ واقعے پر ہم سب کے دل بری طرح رو رہے ہیں اور تڑپ رہے ہیں کہ اگر فوری انصاف نہیں ملا توپتہ نہیں ہمارا معاشرہ کس طرف چلا جائے۔

ایک اور ویڈیو میں خلیل الرحمٰن قمر نے احتجاج میں شرکت سے متعلق اپنے خیالات کا اظہار کیا اور کہا کہ دعا کریں یہ صرف احتجاج نہ رہے پہلے ہی میرے ملک اور نبی کی ساری امت کو احتجاج پر لگایا ہوا ہے ہماری آج کی یہ کوشش بار آور ثابت ہو اور جلد سے جلد ملزموں کو اللہ کے فضل وکرم اور اور اسی نظام عدل سے کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔

سی سی پی او لاہور عمر شیخ کے بیان سے متعلق خلیل الرحمٰن قمر نے کہا کہ بعض اوقات پریشر ہوتا ہے اور سہواً بھی منہ سے ایسی باتیں نکل جاتی ہیں اور میری ان سے درخواست ہے کہ اگر سہواً ہوا ہے تو وہ فوراً معافی مانگ لیں۔

آخر میں انہوں نے کہا کہ میرا مطالبہ ہے کہ جلد از جلد ملزموں کو گرفتار کر کے ان کو سخت سے سخت سزا دی جائے-

واضح رہے کہ حال ہی میں لاہور موٹر وے پر گوجرانوالہ کی رہائشی ثناء نامی خاتون کے ساتھ خوفناک واقعہ اس وقت پیش آیا جب لاہور موٹر وے پر اُن کی گاڑی کا پیٹرول ختم ہو گیا اس دوران ملزمان نے موقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے خاتون کی گاڑی کے شیشے توڑ کر انہیں گن پوائنٹ پر کھیتوں میں لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنایا-

جس کے بعد سی سی پی او نے کہا تھا کہ خاتون رات ساڑھے 12 بجے ڈیفنس سے گوجرانوالہ جانے کے لیے نکلیں، میں حیران ہوں کہ تین بچوں کی ماں ہیں، اکیلی ڈرائیور ہیں، آپ ڈیفنس سے نکلی ہیں تو آپ جی ٹی روڈ کا سیدھا راستہ لیں اور گھر چلی جائیں اور اگر آپ موٹروے کی طرف سے نکلی ہیں تو اپنی گاڑی کا پیٹرول چیک کر لیں۔

اس واقعے کے بعد اور سی سی پی او کے بیان کے بعد سے عوام میں شدید غم و غصہ پایا گیا تھا عوام سمیت حکومت اور شوبز کی معروف شخصیات نے بھی سی سی پی او کے اس بیان کی بھر پور مذمت کی اور شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ان کو ہٹانے کا مطالبہ کیا۔

عورت کو عزت اور مقام دینا چاہیے جس کی وہ حقدار ہے اعجاز اسلم

عورت کو عزت اور مقام دینا چاہیے جس کی وہ حقدار ہے اعجاز اسلم

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.